159

1 جون کے واقعات ایک نظر میں

Spread the love

واقعات

1935ء برطانیہ میں پہلی بار ڈرائیونگ ٹیسٹ متعارف کرایا گیا

2007ء مملکت متحدہ میں عوامی مقامات پرسگریٹ نوشی پر پابندی عائد کردی گئی ۔

1980ء کیبل نیوز نیٹ ورک( سی این این) نے اپنی نشریات کا آغاز کیا

ولادت

661ء ابو محمد حجاج بن یوسف بن حکم بن ابو عقیل ثقفی۔ طائف میں پیدا ہوا وہیں اس کی پرورش بھی ہوئی، حجاج بن یوسف طائف کے مشہور قبیلہ بنو ثقیف سے تعلق رکھتا تھا۔ ابتدائی تعلیم و تربیت اس نے اپنے باپ سے حاصل کی۔ جو ایک مدرس تھا۔ حجاج کا بچپن سے ہی اپنے ہم جماعتوں پر حکومت کرنے کا عادی تھا۔ تعلیم سے فارغ ہو کر اس نے اپنے باپ کے ساتھ ہی تدریس کا پیشہ اختیار کیا لیکن وہ اس پیشے پر قطعی مطمئن نہ تھا اور کسی نہ کسی طرح حکمران بننے کے خواب دیکھتا رہتا تھا۔ بالاخر وہ طائف چھوڑ کر دمشق پہنچا اور کسی نہ کسی طرح عبدالملک بن مروان کے وزیر کی ملازمت حاصل کرنے میں کامیاب ہو گیا۔ وزیر نے جلدی ہی اس کی انتظامی صلاحیتوں کو بھانپ لیا اور اسے ترقی دے کر اپنی جاگیر کا منتظم مقرر کر دیا۔ ایک چیز جس کی وزیر کو ہمیشہ شکایت رہتی تھی اس کی سخت گیری تھی لیکن اس سخت گیری کی وجہ سے وزیر کی جاگیر کا انتظام بہت بہتر ہو گیا تھا۔ اس کی ذات ایک عجیب گورکھ دھندا ہے ہر عجب کام کے ساتھ ایک عجیب بات یہ بھی ہے کہ حجاج کی پیدائش اور وفات کی تاریخ ایک جون ہی ہے۔

1842ء ستیندر ناتھ ٹیگور وہ پہلے ہندوستانی تھے جو انڈین سول سروس کے لیے منتخب ہوئے۔ علاوہ ازیں وہ ایک مصنف، نغمہ نگار اور ماہر لسانیات تھے۔ برطانوی راج کے ہندوستانی معاشرے میں خواتین کی بدحالی اور قید و بند کی زندگی کے خلاف انہوں نے زور و شور سے آواز بلند کی اور آزادی نسواں کے میدان میں زبردست کام کیا۔
سنہ 1882ء ستیندر ناتھ کاروار، کرناٹک میں ضلع جج رہے۔ انڈین سول سروس میں انہوں نے تیس برس کام کیا اور سنہ 1897ء میں صوبہ مہاراشٹر کے شہر ستارا میں جج کے عہدہ سے سبکدوش ہوئے۔

1915 ڈاکٹر مہر عبد الحق سومرہ پاکستان سے تعلق رکھنے والے سرائیکی اور اردو کے ممتاز محقق، ماہرِ لسانیات، نقاد اور مترجم تھے جو اپنی کتاب ملتانی زبان اور اس کا اردو سے تعلق اور قرآن پاک کا سرائیکی ترجمہ کی وجہ سے مشہور و معروف ہیں۔ اس کے علاوہ آپ کی مشہور تصنیف ہندو صنمیات ہے۔ یہ کتاب اردو زبان میں ہندومت کے دیوتاؤں کے تفصیلی تعارف پر مشتمل ہے۔ ان کا انتقال 23 فروری، 1995ء کو ہوا۔

1930حمید کاشمیری (پیدائش: یکم جون، 1930ء- وفات: 6 جولائی، 2003ء) پاکستان سے تعلق رکھنے والے اردو کے ممتاز ناول نگار، افسانہ نگار، ڈراما نویس، کالم نگار تھے۔

1934ء سردار سکندر حیات خانآزاد کشمیر کے صدر اور طویل ترین وزیر اعظم رہے ہیں۔ انہیں سالار جمہوریت کہا جاتا ہے۔

1937ء پروفیسر ڈاکٹر مسکین علی حجازی پاکستان سے تعلق رکھنے والے نامور صحافی، مصنف، کالم نگار اور جامعہ پنجاب کے شعبۂ صحافت کے سربراہ تھے۔ ان کی ابلاغیات کے موضوع پر لکھی ہوئی کتابیں پاکستان بھر کی جامعات میں پڑھائی جاتی ہیں۔ ان کا انتقال 17 جنوری، 2009ء کو ہوا۔

1948ء احمد داؤد پاکستان سے تعلق رکھنے والے اردو ممتاز افسانہ و ناول نگار تھے۔ ان کا انتقال 12 دسمبر، 1994ء کو ہوا

1968ءانوشہ رحمان احمد خان‎ ایک پاکستانی سیاست دان اور وکیل ہے۔

وفات

1233ء ابن الاثیر کا پورا نام عز الدین ابو الحسن علی بن محمد بن عبد الکریم الجزری ہے۔ 555ھ بمطابق 1160ء میں جزیرہ ابن عمر جو عراق عرب (موجودہ ترکی کے صوبہ شیرناک) کی حدود میں موصل کے قریب واقع تھا، پیدا ہوئے۔ اسی جزیرے کی نسبت سے الجزری کہلائے۔ موصل اور بغداد میں تعلیم حاصل کرنے کے بعد 1180ء میں اپنے والد کے پاس موصل میں ہی مستقل سکونت اختیار کر لی۔ ان کے والد بہت عرصے تک موصل میں گورنری کے منصب پر فائز رہے۔ موصل میں انھوں نے خطیب ابوالفضل عبد اللہ ابن احمد الطوسی اور دوسرے فضلاء سے تعلیم حاصل کی۔
مورخین میں ابن جریر طبری کے بعد ابن اثیر کا نام سب سے نمایاں ہے۔
تصانیف: الکامل فی التاریخ (المعروف تاریخ طبری) اسد الغابہ فی معرفۃ الصحابہ، التاريخ الباہر فی الدولۃ الاتابكيہ، اللباب فی تہذيب الانساب۔ آپ 12 مئی 1160 کو پیدا ہوئے۔

1258ء ابن ابی الحدید خلافت عباسیہ کے اواخر عہد کے مشہور مصنف، محقق اور مورخ تھے۔ اُنہیں سقوطِ بغداد تک اپنی علمی و اَدبی خدمات کے حوالے سے عباسی حکومت میں نمایاں درجہ حاصل تھا۔ ابن ابی الحدید کی وجہ شہرت اُن کی مشہور تصنیف شرح نہج البلاغہ ہے۔ وہ 30 دسمبر 1190ء کو پیدا ہوئے۔

1979 ورنر فورس مین ایک فرانسیسی ماہر فعلیات (فزیشن) تھے جنھوں نے 1956 کا نوبل انعام وصول کیا تھا۔انہوں نے دل کی چھوٹی چھوٹی شریانوں سے متعلق ایک طریقہ کار وضح کیا جس کے مطابق 1929 میں اپنے دل کی فلوروسکوپی یعنی اس کا امیج لینے کا تجربہ کیا جسے بعد میں ایکسرے کے طور پر لیا جانے لگا۔ فراسمین جنہوں نے خود کو خطرے میں ڈالتے ہوئے یہ کامیاب تجربہ کیا۔

2018ء رزان اشرف عبد القادر النجار ایک اسرائیلی نرس تھیں جن کو اس وقت اسرائیلی فوجی نے 1 جون 2018ء کو بروز جمعہ تقریباً ساڑھے پانچ بجے خان یونس میں ان کے سینے پر گولی داغی جس سے وہ فوراً جاں بحق ہو گئی۔

ان کے بارے میں تفصیلی معلومات کے لیے یہاں کلک کریں

تعطیلات و تہوار

دنیا کے بیشتر ممالک میں بچوں کا عالمی دن منایاجاتا ہے۔

1، 2، 3 جون کو قادر آباد میں اعتبارحسین شاه کا عرس اور میلہ منعقد ہوتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں