107

30 مئی کے واقعات ایک نظر میں

Spread the love

واقعات

1981ء بنگلہ دیش کے صدر ضیا الرحمان کو چٹاکانگ میں قتل کر دیا گیا۔

ضیاالرحمن کے بارے میں تفصیلات جاننے کے لیے یہاں کلک کریں

1998ء پاکستان نے چھٹا ایٹمی تجربہ کیا۔

1998ء شمالی افغانستان میں چھ اعشاریہ چھ کی شدت کے زلزلے سے پانچ ہزار افراد ہلاک ہوئے

ولادت

1672ء پطرس اعظم یا پیٹر اعظم سلطنت روس کا شہنشاہ تھا۔ پطرس کا تعلق روس کے روسی زار شاہی خاندان سے تھا۔ اُس نے 1682ء سے 1725ء تک حکومت کی۔ اُسے روس کا بیدار مغز شہنشاہ بھی کہا جاتا ہے۔ اس کے انتقال کے بارے میں دو رائے پائی جاتی ہیں ایک 8 فروری جبکہ دوسری تاریخ 28 جنوری 1725ء بیان کی جاتی ہے۔

1908ء ہینس الفوین سویڈن کے طبیعیات دان اور نوبل انعام برائے طبیعیات جیتنے والے شخص تھے۔ انھیں یہ انعام 1959 میں لیوس نیل کے ساتھ مشترکہ طور پر دیا گیا، جس کی وجہ ان کی میگنٹ ہاڈرو ڈآئی نمکس پر ان کا کام تھا۔ ان کا انتقال 2 اپریل 1995ء کو ہوا۔

1912ء جیولیوس ایکزل روڈامریکی ماہر حیاتیاتی کیمیاء تھے جنھوں نے 1970 کا نوبل انعام وصول کیا تھا۔ ان کا انتقال 29 دسمبر 2004 کو ہوا۔

1942ء سردار احمد علی خان پتافی (30 مئی 1942 – ایک پاکستانی سیاست دان تھے جو سندھ کی صوبائی اسمبلی کے رکن رہے۔ بطور رکن انھوں نے 2014ء اور 2017ء تک خدمات انجام دیں۔ ان کا انتقال 5 جنوری 2018 کو ہوا۔

1955ء برائن کوبلکا ایک امریکی کیمیاءدان ہیں جنھوں نے سال 2012 کا نوبل انعام وصول کیا۔

وفات

1259ء ڈنمارک کے بادشاہ کرسٹوفر اول کا انتقال ہوا

1606ء گرو ارجن دیو سکھوں کے پانچویں گرو، گرو رام داس کے بیٹے تھے۔ بعض روایات کے مطابق شہنشاہ اکبر نے انھیں شرفِ باریابی بخشا۔ شہزادہ خسرو نے اپنے باپ شہنشاہ جہانگیر کے خلاف بغاوت کی تو گرو ارجن دیو نے خسرو کی حمایت کی۔ وہ 15 اپریل 1563 میں پیدا ہوئے۔

1640ء سر پیٹر پال روبنز سترھویں صدی کے مشہور مصور تھے جن کے فن پاروں میں مخصوص تحریک، رنگ اور حس پائی جاتی تھی۔ پیٹر پال روبنز اپنی مصورانہ تخلیقات میں پورٹریٹ، لینڈ سکیپ، تاریخی مناظر جو خاص طور پر داستانوں اور واقعات متعلق ہوتے تھے، کے لیے مشہور تھے۔ پیٹر پال روبنز کا اپنے دور میں سب سے بڑا اور مشہور سٹوڈیو ہوا کرتا تھا جہاں انھوں نے سینکڑوں فن پارے تخلیق کیے اور یہ فن پارے اب بھی یورپ بھر میں مصوری سے شغف رکھنے والے ناظرین کے پاس محفوظ ہیں۔ پیٹر پال روبنز اپنے زمانے کے مشہور تعلیم یافتہ انسانی حسیات کے محقق، فنون لطیفہ کے قدردان اور سفارتکار تھے۔ سر پیٹر پال روبنز نے فلپ چہارم، شاہ سپین اور انگلینڈ کے شاہ چارلس اول کے ادوار حکومتوں میں سفارت کاری کے فرائض سر انجام دیے۔ وہ 28 جون 1577 میں پیدا ہوئے۔

1960ء بریس پاسترناک (روس کے نوبل نعام یافتہ شاعر، ناول و افسانہ نگار)

1981ء ضیاالرحمن، بنگلہ دیشی صدر

2005ء فضل محمود، پاکستانی کرکٹ کھلاڑی

2004ء کراچی میں مفتی نظام الدین شامزئی کی شہادت کے بعد شدید ہنگامہ آرائی ہوئی

2004ء عبد الرشید رستم قلم پاکستان سے تعلق رکھنے والے نامور خطاط تھے۔ وہ 1923ء کو علی گڑھ، برطانوی ہندوستان میں پیدا ہوئے۔ انہیں بابائے اردو مولوی عبد الحق نے رستم قلم کا خطاب عطا کیاتھا۔عبد الرشید رستم قلم 30 مئی، 2004ء کو کراچی، پاکستان میں وفات پا گئے۔ وہ کورنگی نمبر 1 کے قبرستان میں آسودہ خاک ہیں۔ وہ 1928 میں پیدا ہوئے۔

2011ء روزالن سوسمین یالوایک امریکی خاتون ماہر فعلیات تھیں جنھوں نے 1977ء کا نوبل انعام وصول کیا تھا۔ وہ اس شعبے میں یہ انعام حاصل کرنے والی دوسری امریکی خاتون تھیں۔ وہ 19 جولائی 1921 کو پیدا ہوئیں

2012ء انڈریو ہکسلے انگریز فعلیاتدان و حیاتیاتی طبیعیات دان تھے جنھوں نے 1963 کا نوبل انعام وصول کیا تھا۔ وہ 22 نومبر 1917ء کو پیدا ہوئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں