افغانستان،امریکی فضائی حملے،خواتین,بچوں سمیت14عام شہری جاں بحق

Spread the love

کابل(مانیٹرنگ ڈیسک )اقوام متحدہ کا کہنا ہے افغانستان میں دو فضائی حملوں

میں 14عام شہری مارے گئے،طالبان کی جا نب سے قبضہ کی گئی امریکی گاڑی

پر افغان فوج نے راکٹ داغ کر اسے تباہ کر دیا جس کے نتیجے میں 4جنگجو

ہلاک ہوگئے جبکہ راکٹ لگنے سے 2 افغان فوجی اور 2 شہری بھی ہلاک ہوئے،

متحارب فر یقین انٹرنیشنل ذمہ داریوں کا احساس کریں،فضائی حملوں میں عام

شہریوں کی ہلا کت کی ذمہ داری امریکہ پر عائد ہوتی ہے۔ بین الاقوامی خبر

رساں ادارہ کے مطابق افغانستان میں عالمی ادارے کے مشن UNAMA کے

مطابق مارے جانیوالوں میں 5خواتین اور7 بچے شامل ہیں۔ یو این مشن کے

مطابق ایک حملہ جنوبی صوبے ہلمند میں کیا گیا جبکہ دوسرا حملہ مشرقی

صوبے کنڑ میں کیا گیا۔ اقوام متحدہ نے یہ بھی کہا متحارب فریقین کو انٹرنیشنل

ذمہ داریوں کا احساس کرنا چاہیے کیونکہ ان کی جنگی کارروائیوں میں عام

شہریوں کی ہلاکتوں میں اضافہ ہو رہا ہے۔ افغانستان میں زیادہ تر فضائی حملے

امریکی جنگی طیارے کرتے ہیں کیونکہ افغان ایئر فورس ابھی پوری طرح فعال

نہیں ہے۔ادھربین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق افغانستان میں طالبان

جنگوئوں نے ایک امریکی گاڑی کو چْرا لیا تھا، افغان فوج نے طالبان کا تعاقب

کرتے ہوئے امریکی گاڑی پر راکٹ داغے جس کے نتیجے میں گاڑی میں سوار

4 جنگجو ہلاک ہوگئے جبکہ دوسری گاڑیوں میں سوار درجن سے زائد طالبان

زخمی ہوگئے۔افغانستان کی وزارت داخلہ کے ترجمان نے اپنے ایک بیان میں کہا

ہے طالبان جنگجو چوری شدہ امریکی گاڑی میں بارود بھر کر لے جارہے تھے

جسے افغان فوج نے راکٹ سے نشانہ بنایا، دھماکے میں 10 شہری اور 5 فوجی

بھی زخمی ہوئے۔ زخمیوں کو قریبی ہسپتال میں طبی امداد فراہم کی گئی۔طالبان

ترجمان نے اپنے ایک بیان میں زیر تسلط امریکی وین کے افغان فوج کے راکٹ

حملے میں تباہ ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا حملے میں ہلاک ہونیوالے طالبان

جنگجو نہیں بلکہ 2 افغان فوجی اور دو شہری تھے۔واضح رہے گزشتہ روز بھی

غزنی میں پولیس نے ایک گاڑی کو روکنے کا اشارہ کیا تو گاڑی میں سوار

جنگجوئوں نے گاڑی کو دھماکے سے اْڑادیا جس کے نتیجے میں 2 پولیس اہلکار

ہلاک اور 4 زخمی ہوگئے تھے۔



Leave a Reply