22 مئی کے واقعات ایک نظر میں

Spread the love

واقعات

1972ء سیلون میں نئے آئین کے نفاذ کے بعدملک کا نام تبدیل کرکے سری لنکا رکھا گیااور دولت مشترکہ میں شمولیت اختیار کی

1972ءلاہور میں امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کا قیام انجنیئرنگ یونیورسٹی لاہور میں

1942ء میکسیکو نے جرمنی اور جاپان کے خلاف جنگ کا اعلان کیا

1927ء چین کے علاقے نین شین میں آٹھ اعشاریہ تین کی شدت سے آنے والے زلزلے سے دولاکھ افراد ہلاک ہوئے

1762ء سوئیڈن اور ایران نے امن معاہدے پر دستخط کیے

2010 کو بھارت کی ریاست کرناٹک کے شہر منگلور میں ایئر انڈیا کا ایک مسافر طیارہ زمین پر اترتے وقت حادثے کا شکار ہوا۔ اس طیارے میں 158 مسافر سوار تھے۔

ولادت

1772ء بانی برہمو سماج۔ بنگال میں پیدا ہوئے۔ بنگالی اور سنسکرت کے علاوہ عربی، فارسی اور انگریزی کے بھی بڑے فاضل تھے۔ اسلام اور مسیحی مذہب کی تعلیمات نے ان پر بڑا اثر کیا اور انہوں نے ہندو سماج کے سدھار کا کام شروع کیا۔ 1830ء میں برہمو سماج کی بنیاد ڈالی۔ مورتی پوجا کی مخالفت کی اور خدا کی وحدانیت کی تعلیم دی۔ ستی کی خوفناک رسم ختم کرنے میں بھی بڑا کام کیا۔ اس کے علاوہ عورتوں کے حقوق اور اپنی قوم کی تعلیم و تربیت پر زور دیا۔ 1831ء میں انگلستان گئے اور وہاں برسٹل کے مقام پر وفات پائی۔ وہ 27 ستمبر 1833 کو اس جہان فانی سے کوچ کر گئے۔

1859ء سر آرتھر اگنیشئیس کونن ڈویل (انگریزی: Sir Arthur Ignatius Conan Doyle) ایک اسکاچستانی معالج اور مصنف تھے۔ اِن کی سب سے مشہور ترین کہانیاں سراغ رساں شرلاک ہومز کے بارے میں تھیں۔ اِن کہانیوں کی مقبولیت کی وجہ سے ڈویل کو جرائم کے جدید افسانوں کا بانی مانا جاتا ہے۔ اِن کی تصانیف میں ایک اہم سنگ میل پروفیسر چیلنجر کے سانحہ جات بھی تھے۔ اِنہوں نے کافی سائنسی قصص، ناٹک، رومانی افسانے، شاعری، غیر افسانوی ادب اور تاریخی کتابیں بھی لکھیں۔ سر آرتھر برطانوی نو آبادیاتی نظام کے کٹر حامی اور حکومت برطانیہ کے پکے وفادار تھے ۔ ان کا انتقال 7 جولائی 1930 کو ہوا۔

1878ء گاما پہلوان یا غلام محمد ، انہیں’’رستمِ زماں‘‘کے خطاب سے نوازا گیا ان کا شمار ان لوگوں میں ہوتا ہے جنہوں نے ہندوستان میں قدیم فن پہلوانی کو بام عروج پر پہنچایاان کا ایک منفرد ریکارڈ ہے کہ 50 سالہ دورِ پہلوانی میں انہیں کسی مقابلے میں شکست کا سامنا نہیں کرنا پڑا ان کا رحیم بخش گوجرانوالہ والے کے ساتھ مقابلہ برابر رہا ناقابل شکست رہنے کی وجہ سے ہی ان کو رستم زماں کا خطاب دیا گیا تھا۔ قیامِ پاکستان کے بعد وہ لاہور منتقل ہو گئے، جہاں انہوں نے اپنے بھائی امام بخش اور بھتیجوں بھولو برادران کے ساتھ بقیہ زندگی گزاری، رستم زماں گاما پہلوان 21 مئی، 1960ء کو لاہور میں انتقال کر گئے، پاکستان کے وزیر اعظم نواز شریف کی اہلیہ کلثوم نواز رشتے میں گاما پہلوان کی نواسی بتائی جاتی ہیں۔

1906ء شاہد احمد دہلوی اردو کے صاحب طرز ادیب، ادبی مجلہ ساقی کے مدیر، مترجم اور ماہرِ موسیقی تھے۔ وہ ڈپٹی نذیر احمد کے پوتے اور مولوی بشیر الدین احمد کے فرزند تھے۔ ان کا اتقال 27 مئی 1967ء کو ہوا۔

1912ء ایک برطانوئی نژاد امریکی کیمیاءدان تھے، اورگنبوران پر کام کے حوالے سے ہی ان کی پہچان ہے اور اسی کارنامے کی وجہ سے ان کو 1979ء نوبل انعام برائے کیمیاء دیا گیا۔ ان کا انتقال 19 دسمبر 2004 کو ہوا۔

1959ء محبوبہ مفتی ایک کشمیری مسلمان سیاست دان ہیں جو 4 اپريل 2016ء 19 جون 2018ء تک جموں و کشمیر کی وزیر اعلیٰ رہیں۔

1987ء سرفراز احمد پاکستان کرکٹ ٹیم کے تمام فارمیٹ کے کپتان ہے۔ سرفراز 22 مئی، 1987ء میں کراچی میں پیدا ہوا۔ اس نے کرکٹ کا آغاز 2006ء میں کراچی کی طرف سے فرسٹ کلاس کرکٹ کھیل کر کیا۔ اس کی کارکردگی کو دیکھتے ہوئے سرفراز کو پاکستان کی انڈر 19 کرکٹ ٹیم میں وکٹ کیپر کے طور پر منتخب کیا گیا۔ صرف کچھ ہی میچوں میں اس نے دیکھنے والوں کو متاثر کیا اور اسے انڈر 19 کا کپتان بنایا گیا۔ اس کے زیر کپتانی پاکستان نے مسلسل دو مرتبہ انڈر 19 کا عالمی کپ جیتا۔ سرفراز کو پاکستان ٹیم میں نومبر 2007 میں زخمی کامران اکمل کی جگہ کھلایا گیا۔ جہاں سے ان کی کامیابی کا سفر شروع ہوا اور اس وقت 2019 کے ورلڈ کپ میں بھی پاکستانی ٹیم کی قیادت کر رہے ہیں۔

وفات

923ء امام الحافظ عبد اللہ بن احمد بن حنبل محدث اور امام احمد بن حنبل کے فرزند تھے۔ امام عبد اللہ تیسری صدی ہجری کے نامور اور مشہور علمائے اسلام میں سے تھے۔ آپ یکم ستمبر 828 کو پیدا ہوئے۔

1545ء شیرشاہ سوری کا اصل نام فرید خان تھا۔ 1486ء میں پیدا ہوئے جو پشتون کی مشہور شاخ اسحاق زئ کا بڑا بیٹا تھا سوری اور۔سام جونپور میں تعلیم پائی۔21 سال والد کی جاگیر کا انتظام چلایا پھر والئ بہار کی ملازمت کی۔ جنوبی بہار کے گورنر بنے۔ کچھ عرصہ شہنشاہ بابر کی ملازمت کی بنگال بہاراور قنوج پر قبضہ کیا مغل شہنشاہ ہمایوں کو شکست دے کر ہندوستان پر اپنی حکمرانی قائم کی۔ اپنی مملکت میں بہت سی اصلاحات نافذ کیں۔ اپنے تعمیری کاموں کی وجہ سے ہندوستان کے نپولین کہلائے سنار گاؤں سے دریائے سندھ تک ایک ہزار پانچ سو کوس لمبی جرنیلی سڑک تعمیر کروائی جو آج تک جی ٹی روڈ کے نام سے موجود ہے۔

1680ء ملا محمد محسن فیض کاشانی گیارہویں صدی اخباری اہل تشیع عالم، مفسر، محدث ، شاعر، فلسفیاور فقیہ تھے۔ ملا فیض کاشانی نے مختلف موضوعات تفسیر، حدیث، فقہ، اخلاق و عرفان میں تفسیر صافی، الوافی، مفاتیح الشرائع، المحجۃ البیضاء اور الکلمات المکنونہ جیسے آثار چھوڑے ہیں۔ فیض کاشانی نے اخباریوں میں سے معتدل روش اختیار کی اس لحاظ سے پہلے فقہا کے برعکس بہت سے مقامات پر ان کے نظریات مختلف ہیں۔ اہم ترین نظریات میں سے مخصوص شرائط کے تحت غنا کا جواز ،مختلف واجبات شرعی کی نسبت سن بلوغ کا مختلف ہونااور نماز جمعہ کے وجوب کا عینی ہونا ہیں۔ کاشان اور اصفہان میں اقامۂ نمازِ جمعہ اُن کی سیاسی فعالیت کی وجہ سے قائم ہوئی۔وہ 26 ستمبر 1598ء کو پیدا ہوئے۔

1835ء وکٹر ہیوگو فرانسیسی شاعر، ناول نگار اور ڈراما نویس تھا۔ وہ 26 فروری فرانس کے شہر بیسانکاں میں پیدا ہوا۔ وہ فرانسیسی زبان کا سب سے عظیم مصنف مانا جاتا ہے۔ شروع میں شاعری اُس کی وجہ شہرت بنی مگر بعد میں اُس نے ناول اور ڈراموں کو بھی بہت شہرت ملی۔ 22 مئی 1885ء کو پیرس میں اُس کا انتقال ہو گیا۔ ان کی پیدائش 26 فروری 1802ء کو ہوئی۔

1983ء البرٹ کلاوڈی بیلجیم کے ڈاکٹراور خلیاتی حیاتیات دان تھے جنھوں نے 1974 کا نوبل انعام وصول کیا تھا ۔

1997ء الفرڈ ہرشے ایک امریکی بیکٹیریو لوجسٹ اور جینیٹکس تھے جنھوں نے 1967 کا نوبل انعام وصول کیا تھا۔ وہ 4 ستمبر 1908 کو پیدا ہوئے۔

تعطیلات و تہوار

1933ء تجارت کا عالمی دن پہلی بار منایا گیا

Please follow and like us:

Leave a Reply