بانڈی پورہ لاپتہ سکول ٹیچر 29 سالہ مشتاق احمد لون کی لاش بر آمد، احتجاجی مظاہرے

Spread the love

جنوبی ضلع پلوامہ اور اونتی پورہ کے بیشتر علاقوں میں تعزیتی ہڑتال، معمولات زندگی ٹھپ

سری نگر(کے پی آئی) بھارتی فوج نے جنوبی کشمیر پلوامہ ، شوپیاں، کولگام، اننت ناگ اضلاع کے درجنوں

دیہات کو محاصرے میں لے لیا ہے۔ شمالی کشمیر کے ضلع بانڈی پورہ لاپتہ سکول ٹیچر 29 سالہ مشتاق احمد

لون کی لاش بر آمد ہونے کے بعد احتجاجی مظاہرے شروع ہو گئے ہیں جبکہ کولگام کے ایک مضافاتی گائوں

میں پی ڈی پی کے کارکن محمد جمال کو گولی مار کر قتل کر دیا گیا ہے۔ جنوبی ضلع پلوامہ اور اونتی پورہ

کے بیشتر علاقوں میں تعزیتی ہڑتال رہی جس کے نتیجے میں معمولات زندگی ٹھپ ہو کر رہ گئی۔کے پی آئی

کے مطابق جنوبی کشمیر پلوامہ ، شوپیاں ، کولگام، اننت ناگ اضلاع کے درجنوں دیہات میں نماز تراویح پر

کریک ڈوان شروع کیا گیا مشتعل نوجوانوں نے احتجاج کیا مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے ٹیر گیس شلنگ

اور ساونڈ شیلوں کا استعمال کیا گیا۔ تروایح اختتام پذیر ہونے کے ساتھ ہی جنوبی کشمیر کے کولگام ، شوپیاں ،

پلوامہ اور اننت ناگ میں فورسز نے آپریشن شروع کیا فورسز نے جنوبی کشمیر کے امام صاحب شوپیاں

علاقے کو محاصرے میں لے کر لوگوں کے چلنے پھرنے پر پابندی عائد کی۔ فورسز نے گھر گھر تلاشی کے

دوران مکینوں کے شناختی کارڈ چیک کئے تاہم اس دوران کسی کی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی۔

Leave a Reply