17 مئی کے واقعات ایک نظر میں

Spread the love

واقعات

1792ء نیویارک اسٹاک ایکسچینج کا قیام عمل میں آیا

1865ء انٹرنیشنل ٹیلی گراف یونین قائم ہوئی

1940ء جنگ عظیم دوم: جرمنی نے برسلز اوربیلجئیم پر قبضہ کر لیا

1967ء عرب اسرائیل جنگ: مصری صدر جمال عبد الناصر نے اسرائیل سے اقوام متحدہ کی ایمرجنسی فورس کے تدریجی انخلاء کا مطالبہ کیا

1969ء انٹرنیشنل ٹریبونل ایوارڈ کے تحت بھارت اور پاکستان کے مابین رن آف کچھ سرحدی تنازع طے پایا

1976ء ازبک میں سات اعشاریہ ایک کی شدت کے زلزلے سے ایک ہزار افراد ہلاک اور دس ہزار بے گھر ہوئے

1978ء چارلی چپلن کی چوری شدہ لاش دوماہ بعد بازیاب کرالی گئی

1983ء اسرائیل، لبنان اور امریکا کے مابین اسرائیل لبنانی علاقوں سے اپنی فوجیں بلانے کے معاہدے پردستخط

1983ء اسرائیل اور لبنان نے امن معاہدے پر دستخط کیے

1995ء اسرائیل،لبنان اور امریکا کے مابین معاہدے پردستخط جس کے تحت اسرائیل لبنانی علاقوں سے اپنی فوجیں بلالے گا

1995ء یاک شیراک نے فرانس کے صدر کاعہدہ سنبھالا

ولادت

1888ء ملا واحدی دہلوی پاکستان سے تعلق رکھنے والے اردو کے صاحب طرز ادیب اور صحافی تھے۔ وہ دہلی سے متعلق تصانیف کی وجہ سے شہرت رکھتے ہیں۔ ان کا انتقال 22 اگست 1976ء کو ہوا۔ ا واحدی کے بزرگوں نے تو ان کا نام سید محمد ارتضیٰ رکھا تھا مگر خواجہ حسن نظامی صاحب نے انہیں ‘ملا واحدی کا خطاب دیا اور اس خطاب کو اتنی شہرت حاصل ہوئی کہ اصل نام خطاب کے پردے میں پوشیدہ ہو گیا۔ تعلیم دہلی ہی میں پائی۔ 1934ء میں دہلی میونسپل کمیٹی کے رکن منتخب ہوئے۔ یہاں 1946ء تک متواتر دو بار رکن منتخب ہوتے رہے اور 1940ء میں راشننگ آفیسر مقرر ہوئے۔

1897ء اوڈ ہسل ایک نارویجن طبیاتی کیمیاءدان تھے انھیں 1969 کا نوبیل انعام برائے کیمیاء دیا گیا۔ ان کا انتقال 11 مئی 1981ء کو ہوا۔

1900ء آیت اللہ خمینی ایران کے شہر خمین میں پیدا ہوئے

1910ء اجمل بہترین کلاسک فلم ہیر رانجھا میں کِدوؤ کے کردار (1970) سے شہرت پائی۔انہوں نے کہا کہ اس کے ساتھ ساتھ 1955 میں فلم ہیر میں ایک ہی کردار ادا کیا۔ اجمل تقسیم سے قبل لاہور 1937. میں پنجابی فلم سوہنی مہینوال میں بطور ولن سکرین پر آئےاس کے بعد یملا جٹ کی (1940) نمائش کے لیے پیش کی گئی ، خزانچی (1941)، خاندان، زمیندار (1942)، گل بلوچ (1944) وغیرہ۔ انہوں نے کل 212، فلموں میں کام کیا جن میں اردو فلمیں77 اور 135 پنجابی فلمیں ہیں۔ پاکستان میں ان کی پہلی فلم ہچکولے (1949) اور آخری 1990 میں بابل تھی۔ اجمل (اصل نام محمد اجمل قادری) 17 مئی، 1910 کو پیدا ہوا اور لاہور میں 19 جون کو انتقال ہو گیا، وہ لیجنڈ پنجابی فلم ہیرو اکمل کے بڑے بھائی تھے۔

1925ء یوگنڈا کے سابق رہنما۔ برطانوی فوج میں رہے جہاں انہیں ایک بہتر فوجی کی حیثیت سے سراہا گیا۔ وہ 1971ء میں ایک بغاوت کے ذریعے ملک کے اقتدار پر قابض ہوئے۔ اقتدار پر قبضے کے بعد انہوں نے برطانوی سامراج کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور انہیں یوگنڈا کے عوام نے رفتہ رفتہ قبول کر لیا۔ جلد ہی انہوں نے خود کو تاعمر صدر قرار دے دیا۔ ان کی حکومت نے ایشیائی نژاد لاکھوں کو ملک چھوڑنے پر مجبور کر دیا۔ برطانیہ میں بسنے والے بیشتر گجراتی انہیں کے دور میں بےگھر ہوئے۔ حقوق انسانی کی تنظیموں کا کہنا ہے کہ ان کے آٹھ سالہ دورِ اقتدار میں ایک لاکھ سے پانچ لاکھ لوگ مارے گئے۔ تنزانیہ کی فوج نے اپریل انیس سو اناسی میں انہیں اقتدار سے سبکدوش کر دیا جس کے بعد وہ لیبیا چلے گئے۔ اسی جلاوطنی کی حالت میں جدہ میں ان کا انتقال ہوا۔ جدہ میں ہی دفن کیے گئے۔ امین نے دو شادیاں کیں جن سے بائیس اولادیں ہوئیں۔ 16 اگست 2003 کو گردے فیل ہونے کی وجہ سے ان کا انتقال ہو گیا۔

1939ء شمیم حنفی اردو کے ایک مشہور شاعر، نقاد اور ڈراما نگار ہیں۔ وہ مشہور ایڈوکیٹ محمد یاسین صدیقی اور بیگم زیب النساء کے بیٹے تھے۔ چھ بھائی بہنوں میں وہ سب سے بڑے تھے۔ شمیم ایک شاعر، نقاد، ڈراما نگار اور مترجم ہونے کے ساتھ ساتھ کئی دیگر فنون سے بھی دلچسپی رکھتے ہیں۔ اسی وجہ سے عملی فنون، مصوری، کمھار کے فن وغیرہ میں گہری دلچسپی ہے۔

1947ء انجینئر اقبال ظفر جھگڑا 17 مئی، 1947ء کو پشاور کے نواحی گاؤں جھگڑا میں پیدا ہوئے۔ وہ 4 مارچ 2016 سے 20اگست 2018 تک صوبہ خیبر پختونخوا کے گورنر رہے۔

1968ء جان مائیکل “مکی” آرتھر ایک جنوبی افریقی کرکٹر ہے جو 1986ء سے 2001ء تک جنوبی افریقا میں ڈومیسٹک کرکٹ کھیل چکا ہے۔ وہ پاکستان قومی کرکٹ ٹیم کا 2019 میں کوچ ہے۔

1997ء عاقب نذیرگجر پاکستان،پنجاب کے شہر قادر آباد میں پیداهوئے

وفات

1987ء گونر مائرڈل سویڈن کے ایک ماہر اقتصادیات تھے اقتصا دیات میں انکی کام کی اہمیت کو دیکھ کر 1974 میں انھیں اور فریڈریک ہایک کو نوبل میموریل انعام برائے معاشیات دیا گیا۔ وہ 6 دسمبر 1898 کو پیدا ہوئے۔

1990ء عبد الرؤف عروج 5 جنوری، 1932ء میں اورنگ آباد (مہاراشٹر) میں پیدا ہوئے۔ تقسیم ہند کے بعد وہ پہلے لاہور میں اور پھر کراچی میں سکونت پزیر ہوئے، جہاں وہ متعدد جرائد و اخبارات سے وابستہ رہے۔ ان اخبارات و جرائد میں روزنامہ امروز، روزنامہ مشرق، انجام، حریت اور ماہنامہ نیا راہی شامل تھے۔ ان کی تصانیف میں اُردو مرثیہ کے پانچ سو سال (1961ء)، اقبال اور بزمِ اقبال حیدرآباد دکن (ستمبر1978ء)، مصحفی کی مثنوی نگاری فارسی گو شعرائے اُردو، خسرو اور عہد خسرو (1975ء)، میر اور عہد میر (1969ء) کے نام شامل ہیں۔ اس کے علاوہ ان کا ایک شعری مجموعہ چراغ آفریدم کے نام سے شائع ہو چکا ہے، جبکہ مرثیوں کا مجموعہ لہو لہو اجالا غیر مطبوعہ ہے۔

2014ء گیرالڈ ایڈر مینامریکی ماہر حیاتیات تھے جنھوں نے 1972 کا نوبل انعام وصول کیا تھا۔ جیرالڈ موریس ایڈیلمن (1 جولائی1929 -17، مئی، 2014) ایک امریکی حیاتیاتی ماہر تھا جس نے پولیوولوجی میڈیسن میں 1972 نوبل انعام کا اشتراک کیا جس میں مدافعتی نظام پر روڈنی رابرٹ پورٹر کے ساتھ کام کرنا تھا۔ ایڈیلمن کے نوبل انعام یافتی تحقیق انٹیبوڈی انوکیوں کی ساخت کی دریافت ہے۔ انٹرویو میں، انہوں نے کہا ہے کہ مدافعتی نظام کے اجزاء کو انفرادی زندگی میں تیار کیا گیا ہے جس طرح دماغ کے اجزاء زندگی بھر میں تیار ہوتے ہیں۔ مدافعتی نظام پر ان کے کام کے درمیان اس طرح کا تسلسل ہے، جس کے لیے انہوں نے نوبل انعام جیت لیا اور اس کے بعد میں نیوروسوسر اور دماغ کے فلسفہ میں بھی اس کے بعد کام کیا۔

Please follow and like us:

Leave a Reply