ایرانی خطرہ،امریکہ کاعراق سے ’’نان ایمرجنسی‘‘ عملے کو نکلنے کا حکم

Spread the love

واشنگٹن (انٹرنیشنل ڈیسک) ایران کی مبینہ دھمکیوں پر تشویش کے ایک اور

اظہار کے طور پر امریکی انتظامیہ نے عراق کے سفارتخانے اور قونصل خانوں

میں موجود تمام ’’نان ایمرجنسی‘‘ عملے کو فوری طور پر ملک سے نکل جانے

کا حکم دیدیا۔ ٹرمپ انتظامیہ ایران پر دبائو ڈالنے کیلئے نئی پابندیاں لگا رہی ہے

اور خطے میں موجود امریکی افواج اور مفادات کیلئے ایران کی طرف سے

بڑھتے ہوئے خطرات کے پیش نظر مشرق وسطیٰ میں اضافی افواج بھیج رہا ہے۔

امریکہ یہ سمجھتا ہے عراق میں موجود پانچ ہزار کے لگ بھگ اس کی افواج کو

ایران سے شدید خطر ہ ہے جبکہ ایران اسے ٹرمپ انتظامیہ کی ’’نفسیاتی جنگ‘‘

قرار دے رہا ہے۔امریکی وزارت خارجہ کے ایک بیان میں بتایا گیا ہے بغداد کے

سفارتخانے، اربیل کے قونصل خانے اور کردستان کے نیم خود مختار علاقے میں

موجود ’’نان ایمرجنسی‘‘ عملے کو سلامتی کی تشویش کے باعث فوری طور پر

نکالا جا رہا ہے، اس دوران امریکی سفارتخانے میں ویزا کا اجراء بھی معطل کر

دیا گیا ہے۔ یہ معلوم نہیں ہے کہ کل کتنا عملہ عراق سے نکلے گا۔ وزارت خارجہ

نے اپنے بیان میں ایرانی خطرے کی تفصیل بیان نہیں کی، تاہم اس کے ترجمان

نے کہا ہے اپنے شہریوں کا تحفظ ہماری اولین ترجیح ہے۔



Please follow and like us:

Leave a Reply