پشاور‘ انسداد پولیو قطروں سے بچوں کی صحت خرابی کا معاملہ، 1 شخص گرفتار

Spread the love

مزید گرفتاریاں بھی ہوں گی ، پولیو ویکسین بالکل محفوظ ہے،بابر بن عطا کا ٹویٹ

پشاور (نامہ نگار، ہیلتھ رپورٹر) پشاور کے علاقے بڈھ بیر ماشو خیل میں پولیو ویکسین سے بچوں کے متاثر

ہونے کی افواہ کے بعد پولیس نے نذر محمد نامی ایک شخص کو گرفتار کرلیا ۔وزیراعظم کے فوکل پرسن

برائے انسداد پولیو بابربن عطا نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر ٹویٹ کی ہے کہ پشاور پولیس نے نذر

محمد ولد ولی محمد کو گرفتار کر لیا اور مزید گرفتاریاں بھی ہوں گی۔بابربن عطا نے اپنی ٹویٹ میں کہا کہ

پولیو ویکسین بالکل محفوظ ہے۔گزشتہ شب وزیراعظم کے فوکل پرسن برائے انسداد پولیو نے اپنے اکاؤنٹ سے

ایک ویڈیو ٹویٹ کی تھی جس میں ایک شخص کو دیکھا جاسکتا ہے جو کہہ رہا ہے کہ اگر ہم پولیو پلاتے ہیں

بچے بے حوش ہوجاتے ہیں اور اگر نہیں پلاتے تو ہمارے خلاف ایف آئی آر درج کی جاتی ہے۔ویڈیو میں

صاف دیکھا جاسکتا ہے کہ ایک شخص بچوں کو بیڈ پر لیٹنے کا کہہ رہا ہے۔بابربن عطا نے جو ویڈیوز اپ لوڈ

کی ہیں ان کے جواب میں لوگ ذمہ داران کے خلاف قانونی چارہ جوئی کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ شہریوں نے

بتایا کہ اس ڈرامے کے پیچھے تمام کرداروں کو سامنے لانا چاہیے۔یاد رہے کہ گزشتہ روز پشاور کے

مضافاتی علاقے بڈھ بیر ماشو خیل میں پولیو ویکسین سے بچوں کے متاثر ہونے کی افواہ پھیلائی گئی تھی جس

پر حکام فوری ایکشن لیا تھا۔افواہ پھیلنے کے بعد والدین کی بڑی تعداد بچوں کو لے کر مقامی اسپتال پہنچ گئی

تاہم اسپتال انتظامیہ نے سب بچوں کی صحت تسلی بخش قرار دی ہے۔مقامی اسکول کے 60 سے زائد بچوں کو

بھی ہسپتا ل منتقل کیا گیا تھا۔ سکول انتظامیہ نے کہا کہ پولیو ٹیم نے بچوں کو قطرے پلائے تھے۔ پولیو کمیونٹی

آفیسر صباحت ارم نے کہا کہ بچوں کی حالت پولیو ویکسین کے باعث خراب نہیں ہوئی، پولیو محفوظ ویکسین

ہے اسکا سائیڈ ایفیکٹ ممکن نہیں۔وزیراعظم کے فوکل پرسن برائے انسداد پولیو بابربن عطا نے کہا تھا مذکورہ

اسکول کی انتظامیہ اس سے قبل بھی بچوں کو پولیوویکسین پلانے سے انکار کرتی رہی ہے۔

Please follow and like us:

Leave a Reply