خیبر پختونخوا اسمبلی ارکین کے لیے ملک میں مہنگائی، تنخواہوں میں مزید اضافے کا مطالبہ

Spread the love

لاکھوں روپے تنخواہ پانے والوں کا گزارہ نہیں ہورہا کیا 12000 تنخواہ لینے والوں کا ملک بھی یہی ہے؟

پشاور(صرف اردو ڈاٹ کام نیوز)خیبر پختونخوا اسمبلی ارکان نے تنخواہوں میں مزید اضافے کا مطالبہ کر دیا۔

ان کا کہنا ہے مہنگائی بڑ ھ گئی موجودہ تنخواہ میں گزارا نہیں ہوتا۔خیبر پختونخوا کے اراکین اسمبلی لاکھوں

روپے کی تنخواہوں کی وصولی کے باوجود خوش نہیں۔ صوبائی اسمبلی کا ایک رکن موجودہ وقت میں 80ہزار

روپے تنخواہ وصول کر رہا ہے دیگر مراعات ، بجلی پانی گیس روٹی بچوں کی تعلیم بیرونی دورے

دارالحکومت سے دور رہنے والوں کے لیے سفری اخراجات سال بعد بیوی بچوں کے ساتھ بیرون ملک کا سفر

سرکاری خرچ پر ، پیٹرول ٹیلی فون کوٹے یہ سب ملا کر ان کا معاوضہ 5 لاکھ سے تجاوز کر جاتا ہے۔ یہ بھی

یاد رہے کہ قومی خزانے پر بوجھ یہ اشرافیہ کروڑوں کی مالک ہے اور سب فیکٹریوں کے مالک ہیں۔ شہریوں

کا کہنا ہے صوبائی خزانے پر پہلے ہی بوجھ ہے، کفایت شعاری اور بچت کا نعرہ لگانے والے عوام کا بھی تو

سوچیں۔کیا اس ملک میں کوئی پوچھ سکتا ہے کہ لاکھوں روپے تنخواہ پانے والے اراکین کا تو گزارہ نہیں ہو

رہا ہے 12000 ہزار روپے تنخواہ پانے والے مزدور کے گھر کا چولہا کیسے جلتا ہے؟ کیا ان مزدوروں کا

ملک بھی یہی ہے یا وہ محض غلام ہیں اس 2 فیصد اشرافیہ کے۔ اراکین اسمبلی کی شاہانہ تنخواہیں اور

مراعات کے باوجود مزید اضافے کے مطالبے سے غربت کے مارے عوام میں بے چینی اور مایوسی پھیلنے

میں اضافے کے خدشات ہیں

Please follow and like us:

Leave a Reply