پیپلزپارٹی ہمیشہ ٹارگٹ رہی ،ہر قسم کے حالات کا مقابلہ کرنے کیلئے تیار ہیں،بلاول بھٹو

Spread the love

لاڑکانہ (سٹاف رپورٹر) پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے

کہ صرف بھٹو کا ٹرائل ہی راولپنڈی میں ہوتا ہے، مقدمات کا سامنا کریں گے،

احتساب کے نام پر انتقام لیا جا رہا ہے۔ ایک،دوسال سے اویس مظفر سے کوئی

رابطہ نہیں ہوا، پٹرول بم گرانے سے توجہ ہٹانے کیلئے رابطوں کی خبر چلائی

گئی۔ وزیراعظم سندھ سے متعلق بیان پر معافی مانگیں، وزیراعظم کیسے کہہ

سکتے ہیں کہ انہیں سندھ کے وزیراعلی کی ضرورت نہیں، جتنی ترقی سندھ میں

ہو رہی ہے اتنی کہیں نہیں ہو رہی، پیپلز پارٹی کے خلاف جاری انتقامی کارروائی

کے خلاف قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے احتجاج کریں گے۔ان خیالات کا اظہا

ر انہوںنے گزشتہ روز لاڑکانہ میں نیشنل انسٹیٹیوٹ آف کارڈیو ویسکیولر

ڈیزیز(این آئی سی وی ڈی)کا افتتاح کرنے کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب

کرتے ہوئے کیا ۔بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ سندھ میں جتنی ترقی صحت کے

شعبے میں ہورہی ہے دیگر صوبوں میں نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ 18ویں ترمیم

کے بعد سندھ حکومت نے بہترین کارکردگی دکھائی۔انہوں نے کہا کہ جہاں تک

انتقام کی بات ہے تو غیر جمہوری قوتوں کی ہمیشہ سے پاکستان پیپلزپارٹی کے

خلاف کوشش رہی ہے کہ غریب کی آواز کو دبایا جائے۔چیئرمین پی پی نے کہا کہ

پیپلزپارٹی ہمیشہ ایک ٹارگٹ رہی ہے، ہم ہر قسم کے حالات کا مقابلہ کرنے کیلئے

تیار ہیں۔بلاول بھٹو نے کہا ہے کہ صرف بھٹو کا ٹرائل ہی راولپنڈی میں ہوتا ہے،

مقدمات کا سامنا کریں گے، احتساب کے نام پر انتقام لیا جا رہا ہے، پنڈی میں ٹرائل

کرنے پر اعتراض ہے، ہر فورم پر اپنا اعتراض اٹھائیں گے، دنیا بھر میں جہاں

جرم ہوتا ہے وہیں اس کا فیصلہ ہوتا ہے۔انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی نے ضیا،

ایوب ، مشرف کی آمریت کا مقابلہ کیا، دہشت گردوں کا مقابلہ کیا تو وہ کسی کٹھ

پتلی حکومت سے تو نہیں ڈرے گی۔بلاول بھٹو نے کہا کہ حکومت نے جن غلط

پالیسیوں سے معیشت کو چلانے کی کوشش کی ہے اس کا نقصان ہر پاکستانی اٹھا

رہا ہے۔ جب سے عمران خان کی حکومت آئی ہے عوام مہنگائی کے سونامی میں

ڈوب گئے ہیں، گیس، بجلی اور کھانے پینے کی اشیا مہنگی ہوگئی ہیں۔بلاول بھٹو

نے کہا کہ وزیراعظم ٹیکس وصولی کم ہونے کا رونا رو رہے ہیں ،وہ تو کہتے

تھے ان کے پاس ٹیکس وصولی کیلئے ماہرین کی ٹیم موجود ہے ۔انہوں نے کہا کہ

جس طرح سے وزیراعظم نے گھوٹکی میں کھڑے ہو کر 18ویں ترمیم کے خلاف

بات کی وہ اس پر بھی معافی مانگیں۔



Please follow and like us:

اپنا تبصرہ بھیجیں