ن لیگ اور پی پی کے دور میں 60 ارب ڈالر قرض، رقم دونوں نے بانٹ لی،فواد چوہدری

Spread the love

1947 سے 2008 تک پاکستان کا کل بیرونی قرضہ 37 بلین ڈالر رہا،2008سے 2018ء تک 60ارب ڈالر کہاں استعال ہوئے

پیسہ دو خاندانوں نے آپس میں تقسیم کیا، ہنڈی اور حوالہ سے باہر بھیجا گیا، نواز،شہباز اور زرداری اس تماشے کے مرکزی کردار ہیں، ٹویٹ

اسلام آباد (سوشل میڈیا سیل) وزیر اطلاعات و نشریات فواد چودھری نے کہا ہے کہ ن لیگ اور پیپلزپارٹی

کے دور میں 60 ارب ڈالر قرض لیا گیا، یہ رقم دونوں خاندانوں نے بانٹ لی، نواز شریف، شہباز شریف اور

زرداری تماشے کے مرکزی کردار ہیں ۔ انہوں نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا

1947 سے 2008 تک پاکستان کا کل بیرونی قرضہ 37 بلین ڈالر رہا، اس رقم سے اسلام آباد بنا، تربیلا بنا،

منگلا بنا، نیول بیسز بنائیں، فوج کو جدید ہتھیاروں سے لیس کیا، گوادر بنایا اورموٹر وے بنی۔ 2008 سے

2018 بیرونی قرضہ پہنچا97 ارب ڈالر پر، یعنی 60 ارب کا اضافہ سوال یہ ہے یہ پیسا کہاں گیا؟یہ پیسہ دو

خاندانوں نے آپس میں تقسیم کیا، حدیبیہ فراڈکا ماڈل دونوں حکمران خاندانوں نے بار بار استعمال کیا، پیسہ ہنڈی

اور حوالہ سے باہر بھیجا گیا اور گھمایا گیا، جعلی اکائونٹس اور جعلی لوگ استعمال ہوئے، نواز،شہباز اور

زرداری اس تماشے کے مرکزی کردار ہیں۔

Please follow and like us:

اپنا تبصرہ بھیجیں