ملین مارچ انسانوں کا سمندر نہ دکھانے والا میڈیا اپنے مستقبل کے بارے میں سوچ لے: فضل الرحمن

Spread the love

وزیر اعظم عمران خان اور اس کی حکومت کی اکثریت جعلی ہے، یہ نصب کیا گیا وزیر اعظم ہے

نیب انتقامی ادارہ ہے، عمران اپنی فکر کریں

لاہور (صباح نیوز)جمعیت علما اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان اور اس کی حکومت کی اکثریت جعلی ہے ۔ یہ نصب کیا گیا وزیر اعظم، ملک میں حکومت عمران خان کی نہیں ، دیکھنا یہ ہے کہ پس پشت جو قوتیں ہیں وہ اسے کتنا کھینچتی ہیں ۔ میاں نواز شریف کی مزاج پرسی کیلئے آیا تھا ، سیاسی باتیں بھی ہوئیں ، اب ن لیگ اپنا آئندہ کا لائحہ عمل جماعت کے اندر باہمی مشاورت کے بعد طے کرے گی۔ آصف علی زرداری اور نواز شریف کے درمیان ملاقات میں کوئی رکاوٹ نہیں ہے ۔ ایک دو روز میں پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری سے بھی ملاقات کروں گا۔

نیب ایک انتقامی ادارہ ہے اور اسے برے طریقہ سے استعمال کیا جا رہا ہے، نیب سے احتساب اور انصاف کی توقع نہیں کی جا سکتی ، نیب کے حوالہ سے ہمیں کچھ سخت فیصلے لینے چاہئیں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے آج 9 اپریل 2019 کو پاکستان مسلم لیگ ن کے قائد و سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کی مزاج پرسی کے بعد جاتی امراء میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ عمران خان، ہماری نہیں اپنی حکومت کی فکر کریں کہ وہ کب جا رہی ہے۔ انہوں نے نواز شریف سے جیل میں ملاقات نہ ہوئی تو اب تیماری داری کے لئے آیا ہوں۔

ملک میں بدترین مہنگائی ہے اور عام آدمی کی زندگی اجیرن بنا دی گئی ہے۔ جس طرح پاکستانی معیشت ہچکولے کھا رہی ہے۔

انہوں نے کہا ایسے لوگ جو پاکستان کے نظریے کو نہیں جانتے، پاکستان کے حالات سے واقفیت نہیں رکھتے، معیشت کے حوالہ سے الف، ب سے بھی واقف نہ ہوں اور ملک ان کے حوالہ کر دیا جائے تو پھر اندازہ لگایا جا سکتا ہے ملک کس طرف جائے گا۔

انہوں نے کہا جے یو آئی (ف) ملک میں 10ملین مارچ مکمل کر چکی ہے اور اس میں عوام کا سمندر شریک ہوتا تھا۔

میں میڈیا سے بھی یہ بات کہنا چاہوں گا کہ اتنے بڑے ایونٹس کو جن میں تا حدنظر انسان موجود ہوں اور اس کو آپ نظر انداز کرتے چلے جائیں تو پھر میڈیا بھی اپنے مستقبل کے بارے میں سوچ لے کہ کیا اس کی جگہ سوشل میڈیا نہیں لے گا، کیا آپ پر اعتماد ختم نہیں ہو گا، کیا آپ کے حوالہ سے لوگ مایوس نہیں ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ اگر میڈیا سمجھتا ہے عمران خان کی حکومت ہے توایسا کچھ نہیں ،

ایک سوال پر کہ وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے ہم نے مولانا فضل الرحمن کو پارلیمنٹ سے باہر کر دیا ہے، اس پر مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ یہ گھسا پٹا سوال ہے اب وہ اپنے خاتمہ کا سوچیں ، ہمارے خاتمہ کی فکر نہ کریں۔

دونوں رہنماؤں کی ملاقات تقریبا 2 گھنٹے تک جاری رہی۔

Please follow and like us:

اپنا تبصرہ بھیجیں