16 مارچ کے واقعات ایک نظر میں

Spread the love

واقعات

1846ء انگریزون نے معاہدہ امرتسر کے تحت جموں کشمیر 75 لاکھ نانک شاہی روپوں میں گلاب سنگھ کو فروخت کیا۔

1926ء امریکی سائنس دان روبرٹ گوڈرڈ نے مائع ایندھن سے چلنے ولاپہلا راکٹ بنایا۔

1959ء عراق اور سوویت یونین کے درمیان معاشی اور تکنیکی معاہدے پر دستخط ہوئے۔

1977ء انگریزی زبان میں نئی انجیل شائع کی گئی۔

1988ء ایران عراق جنگ کے دوران عراق کے شہر ہالابجا کے علاقے میں کیمیائی ہتھیاروں سے حملہ کیا گیا جس میں پانچ ہزار افراد ہلاک جبکہ دس ہزار زخمی ہوئے۔

1988ء شمالی عراق کے کرد علاقے حلبجہ میں ہزاروں لوگ زہریلی گیس سے مارے گئے۔ جس کی ذمہ داری صدام حسین کے کزن علی حسن الماجد پر ڈالی گئی اس واقعے کی وجہ سے اس کی عرفیت جنرل کیمیکل علی مشہور ہوئی۔

2007ء انٹرامریکن ڈیولپمنٹ بینک نے پانچ غریب ترین ممالک، بولیویا، ہنڈراس، نکاراگوا، ہیٹی اور گیانا کے ذمے چاراعشاریہ چاربلین ڈالرکے قرضے معاف کر دئیے۔

2008ء – جنوبی وزیرستان میں امریکی میزائل حملے میں 20 جاں بحق، 8 زخمی۔

2008ء ہارورڈ یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے انسان کے جسم میں کینسر کے خلیوں کی نشورنماروکنے کا طریقہ کار دریافت کیا۔

ولادت

1751ء جیمز میڈیسن امریکی سیاست دان اور امریکا کے چوتھے صدر تھے جو منصب صدارت پر 1809ء تا 1817ء تک فائز رہے۔ انہیں ریاست ہائے متحدہ کا بانی اور امریکی آئین کا باپ تصور کیا جاتا ہے جو اس دستاویز کے اہم ترین مصنف تھے۔ وہ متحدہ امریکی کانگریس کے پہلے سربراہ تھے جن کی زیر صدارت کئی بنیادی قوانین بنائے گئے اور امریکی آئین میں پہلی دس ترامیم کر کے بنیادی انسانی حقوق وضع کیے گئے جن کی وجہ سے انہیں بنیادی حقوق کے بل کا باپ بھی کہا جاتا ہے۔ بطور سیاست دان اور دانشور میڈیس اس بات پر اعتقاد رکھتے تھے کہ نئی جمہوریہ کے لیے سب سے اہم ضرورت چیک اینڈ بیلنس ہے تا کہ ارتکاز طاقت کو ذاتی مفادات کے لیے استعمال سے روکا جا سکے۔ وہ سمجھتے تھے کہ نئی قوم کو بدعنوانی اور رشوت ستانی کے خلاف جنگ کرنی چاہیے اور وہ ریاست کو بدعنوانی سے پاک کرنے کے لیے نظام وضع کرنے کی کوشش کرتے رہے۔ اس کا انتقال 18 جون 1836 کو ہوا۔

1789ء جارج سائمن اوہم ایک جرمن ماہر طبیعیات تھا جس نے بجلی سے متعلق کلیہ اوہم پیش کیا۔ کولون، نورمبرگ اور میونخ کی یونیورسٹیوں میں علم طبیعیات کا پروفیسر رہا۔ برقی رو کے خلاف کسی چیز کی مزاحمت کی اکائی کو اسی سائنس دان کے نام پر اوہم کہتے ہیں۔ اوہم نے 6 جولائی 1854ء کو اس جہانِ فانی کو خیر باد کہا۔

1839ء سلی پریدہم ایک فرانسیسی زبان کے شاعر اور نثرنگار تھے۔ آپ نوبل ادب انعام جیتنے والے پہلے ادیب تھے۔ ان کا انتقال 6 ستمبر، 1907ء کو ہوا۔

1868ء میکسم گورکی روسی، روس کے مشہور انقلابی شاعر، ناول نگار، افسانہ نگار، ڈراما نویس اور صحافی ہیں جنہوں نے اپنی تحریروں سے دنیا کے بہت بڑے حصے کو متاثر کیا، انقلاب میں ایک نئی روح پھونک دی اور دنیا کے مظلوم طبقے و پسے ہوئے لوگوں میں امید کی ایک نئی لہر پیدا کردی جس کی بازگشت آج تک جاری ہے۔ ان کا انتقال 28 جون 1936ء کو ہوا۔

1877ء – رضا شاہ پہلوی، ایرانی شاہ

1892ء عبد الماجد دریابادی دریا آباد، ضلع بارہ بنکی، بھارت میں ایک قدوائی خاندان میں پیدا ہوئے۔ اُن کے دادا مفتی مظہر کریم کو انگریز سرکار کے خلاف ایک فتویٰ پر دستخط کرنے کے جرم میں جزائر انڈومان میں بطور سزا کے بھیج دیا گیاتھا۔ آپ ہندوستانی مسلمان محقق اور مفسر قرآن تھے۔ آپ بہت سے تنظیموں سے منسلک رہے۔ اِن میں تحریک خلافت، رائل ایشیاٹک سوسائٹی لندن، علی گڑھ مسلم یونیورسٹی، علی گڑھ، ندوۃ العلماء، لکھنؤ، شبلی اکیڈمی، اعظم گڑھ کے علاوہ اور بہت سی اسلامی اور ادبی انجمنوں کے رکن تھے۔ عبد الماجد دریابادی نے انگریزی کے ساتھ ساتھ اردو میں بھی ایک جامع تفسیر قرآن لکھی ہے۔ اُن کی اردو اور انگریزی تفسیر کی خاص بات یہ ہے کہ انہوں نے یہ تفاسیر اسلام پر مسیحیت کی طرف سے کیے جانے والے اعتراضات کو سامنے رکھتے ہوئے لکھی ہے، مزید ان تفاسیر میں مسیحیت کے اعتراضات رد کرتے ہوئے بائبل اور دوسرے مغربی مستشرقین کی کتابوں سے دلائل دیے ہیں۔ آپ نے 6 جنوری 1977 کو وفات پائی۔ آپ نے تفسیر ماجدی میں سورۃ یوسف کے آخر میں لکھا ہے کہ اٹھاونویں پشت پر جا کر آپ کا شجرہ نسب لاوی بن یعقوب سے جا ملتا ہے۔

1918ء فریڈرک رینز ایک امریکی طبیعیات دان تھے۔ انہوں نے طبیعیات کا نوبل انعام بھی جیتا تھا۔ یہ انعام 1995 میں انہوں نے اپنے ہم وطن سائنس دان مارٹن لیوس پیرل ٹاو لیپٹون کی دریافت اور لپٹون فزکس میں اولین تجرباتی افعال کے سبب حاصل کیا تھا۔ ان کا انتقال 26 اگست 1998ء کو ہوا۔

1953ء رچرڈ میتھیو سٹالمین ایک یہودی نژاد امریکی کمپیوٹر سائنس دان اور آزاد سافٹ ویئر کے لیے سرگرم ہے، اس کو عموماً “rms” لکھا جاتا ہے۔ آزاد سافٹ ویئر کی تحریک کے ذریعہ رچرڈ سٹالمین کا مقصد یہ ہے کہ سوفٹویئرز اور کمپیوٹر پروگرامز اس انداز میں تقسیم ہوں کہ انھیں حاصل کرنے والے افراد ان سوفٹویئرز کو استعمال کرنے کے ساتھ، ان کا مطالعہ اور تقسیم و ترمیم میں آزاد ہوں۔ جو سافٹ ویئر ان مذکورہ آزادیوں سے متصف ہوں ان کے لیے آزاد سوفٹویئر کی اصطلاح استعمال کی جاتی ہے۔ 1983ء میں اس نے گنو منصوبہ کی بنیاد رکھی جس کا مقصد یونکس طرز کا آزاد آپریٹنگ سسٹم بنانا تھا۔ اس منصوبہ سے آزاد سوفٹویئر تحریک کی بنیاد پڑی اور اکتوبر 1985ء میں اس نے آزاد سوفٹویئر فاؤنڈیشن کی بنیاد رکھی۔

1994ء ہارون طارق پاکستانی طالب علم، جس نے انٹرنیشنل جنرل سرٹیفیکیٹ آف سیکنڈری ایجوکیشن کے تحت جامع کیمبرج کے عالمی امتجانات میں ’’او‘‘ اور ’’اے‘‘ درجہ میں 47 ’’اے‘‘ گریڈ لے کر نیا عالمی ریکارڈ قائم کیا۔

وفات

1935ء جان جیمز رکرڈ میکلاؤڈ ایک اسکاچستانی ماہر فعلیات و حیاتیاتی کیمیاءدان تھے۔ انھوں نے اپنے کام کا زیادہ توجہ کاربوہائی ڈریٹ کے ہضم ہونے کے عمل کی جانب مرکوز رکھا انھیں 1923ء کا نوبل انعام برائے طب دیا گیا۔

1937ء سر جوزف اسٹن چیمبرلین ایک برطانوئی سیاست دان تھے۔ انہوں نے 1925 میں نوبل امن انعام حاصل کیا۔
ان کی پیدائش 16 اکتوبر 1863 کو ہوا۔

1940ء سلما لاگرلف، ایک سویڈش زبان کے لکھاری تھی انہوں نے 1909ء کا نوبل ادب انعام جیتا۔ وہ یہ اعزاز حاصل کرنے والی پہلی خاتوں تھیں۔ وہ 20 نومبر 1858ء کو پیدا ہوئیں۔

1993ء محمد خان جونیجو پاکستان کے دسویں وزیراعظم تھے۔ آپ صوبہ سندھ کے علاقے سندھڑی میں پیدا ہوئے۔ برطانیہ سے زراعت میں ڈپلومہ حاصل کیا۔ سیاسی زندگی کا آغاز اکیس سال کی عمر سے کیا۔ 1962 میں آپ کو سانگھڑ سے مغربی پاکستان سے صوبائی اسمبلی کا رکن منتحب کیا گیا۔ جولائی 1963ء میں آپ کو مغربی پاکستان کا وزیر بنایا گیا۔ کئی سالوں کی علالت کے بعد 16 مارچ 1993 کو آپ وفات پاگئے۔ وہ 18 اگست 1932 کو پیدا ہوئے۔

1998ء ڈیریک بارٹون ایک انگریز نامیاتی کیمیاءدان تھے انھیں 1969 کا نوبیل انعام برائے کیمیاء دیا گیا۔ وہ 8 ستمبر 1918ء کو پیدا ہوئے۔

2003ء ریچل کوری، عالمی اتحاد تنظیم کی امریکی رکن تھی، جو مقبوضہ فلسطین میں اسرائیلی فوج کی طرف سے فلسطینی گھر کو منہدم کرتے ہوئے بلڈوزر (bulldozer )کو روکنے کے لیے اس کے سامنے کھڑی ہو گئی، مگر اسرائیلی بلڈوزر اس کو خاطر میں نہ لاتے ہوئے اس پر چڑھ دوڑا اور ریچل نے اپنے احتجاجی مظاہرے میں بہادری سے جان دے دی۔ یورپی ممالک میں ریچل کی موت پر ملاجلا ردّ عمل رہا۔ البتہ ریچل کے وطن امریکا میں شاید ہی کوئی آواز کھلے بندوں اس کے حق میں اُٹھی۔ نہ صرف یہ بلکہ الٹا اسے دہشت گرد کہا گیا اور اس کے والدین کو نفرت انگیز پیغامات بھیجے گئے جس میں اس کے کچلے جانے پر خوشی کا اظہار کیا گیا۔ بہت سے لوگوں نے کہا کہ وہ اسی انجام کی حقدار تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں