15 مارچ کے واقعات ایک نظر میں

Spread the love

واقعات

1744ء فرانسیسی بادشاہ لوئس پندرہ نے برطانیہ سے جنگ کا اعلان کیا۔

1877ء برطانیہ اور آسٹریلیا کے درمیان پہلا ٹیسٹ کرکٹ میچ شروع ہوا۔

1939ء جرمنی نے چیکو سلواکیہ پر قبضہ کیا۔

1961ء جنوبی افریقہ نے دولت مشترکہ سے علیحدگی اختیار کی۔

1981ء پاکستانی مغوی طیارے کے مسافر ملک شام میں رہا ہوئے ۔

1985ء ہلا انٹرنیٹ ڈومین نیم سمبولکس ڈاٹ کام رجسٹرڈ ہوا۔

1995ء بینظیر بھٹو کے بھائی مرتضی بھٹو نے پاکستان پیپلز پارٹی (شہید بھٹو) کے نام سے اپنی الگ سیاسی جماعت قائم کی۔

2003ء ہو جن تاؤ چین کے صدر بنے۔

2008ء اسلام آباد میں اطالوی ریسٹورنٹ میں بم دھماکا، 2 غیر ملکی ہلاک، 19 زخمی۔

2019ء اسد منیر پاکستان میں آرمی کے ریٹائرڈ بریگیڈئر، اسد منیر نیب کی جانب سےجاری تحقیقات پر پریشان تھے، نیب کی جانب سے ان پر اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے ایف 11 میں پلاٹ بحال کرنے کا الزام تھا۔ بریگیڈیئر ریٹائرڈاسد منیرسی ڈی اے میں ممبراسٹیٹ بھی رہ چکے تھے۔ ان کے اہل خانہ نے بتایا تھا کہ صبح ان کی لاش پنکھے سے لٹکی ملی تھی، انہوں نے پریشانی میں خود کشی کر لی اور اہل خانہ نے پوسٹم مارٹم کرانے سےبھی انکار کر دیاجس سے بعد ڈپٹی کمشنر اسلام آباد کی ہدایت پر لاش لواحقین کے حوالے کر دی گئی۔

2019ء دنیا کے سب سے پر امن ملک نیوزی لینڈ میں نماز جمعہ میں مصروف نمازیوںپر اندھا دھند فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں 49 نمازی شہید جبکہ 48 افراد زخمی ہو گئے، اس حادثے میں ایک پاکستانی شہید ہوا جبکہ 7 لاپتہ ہوئے، نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم نے اس واقعہ کو دہشت گردی قرار دیا جبکہ تمام یورپی میڈیا نے اس کو محض فائرنگ کہا اور وضاحت دیتا رہا کہ مذکورہ شخص کا ذہنی توازن ٹھیک نہیں ہے۔ فائرنگ کرنے والے کی شناخت برینٹن ٹیرینٹ کے نام سے کی گئی جو آسٹریلیا کا ایک سفید فام پاشندہ ہے۔ اس نے تبایا کہ وہ ٹرمپ کی نسل پرستانہ پالیسیوں کو انتہائی پسند کرتا ہے اور اس نے گن پر ان 6 لوگوں کے نام لکھ رکھے تھے

“Anton Lundin Pettersson”:
اینٹون لنڈن پیٹرسن ، یہ اس طالبعلم کا نام ہے جس نے سوئیڈن میں مہاجرین کے دو بچوں کو قتل کیا تھا۔

Alexandre Bissonnette:
الیگزینڈر بیسونیٹ نے 2017 میں کینیڈا میں ایک مسجد پر حملہ کرکے 6 لوگوں کو قتل کیا تھا۔

Skanderberg:
سکندربرگ البانیہ کے اس رہنما کا نام ہے جس نے خلافت عثمانیہ کے خلاف بغاوت شروع کی تھی۔

Antonio Bragadin:
یہ وینس کے اس فوجی افسر کا نام ہے جس نے ایک معاہدے کی خلاف ورزی کی اور ترک مغویوں کو قتل کیا۔

Charles Martel:
یہ اس فرنگی فوجی رہنما کا نام ہے جس نے معرکہ بلاط الشہداء میں مسلمانوں کو شکست دی تھی۔ اس معرکے میں اسپین میں قائم خلافت بنو امیہ کو فرنگیوں کی افواج کے ہاتھوں شکست ہوئی۔

ویانا 1683:
1683 ویانا میں خلافت عثمانیہ نے دوسری مرتبہ ویانا کا محاصرہ کیا تھا۔

ولادت

1767ء اینڈریو جیکسن، امریکہ کا ساتواں صدر۔ شمالی کیرولائنا میں پیدا ہوا۔ پہلے سالسبری اور ٹینیسی میں وکالت کی۔ 1787ء میں امریکی سینٹ کا رکن منتخب ہوا۔ 1802ء میں ٹینسی کی فوج میں میجر جنرل مقرر ہوا۔ اور رینو اور لینز کے دفاع پر مامور کیا گیا۔ انھی دنوں ایک ریڈ انڈین قبیلے کی بغاوت فرو کرنے سے اس کی مقبولیت میں اضافہ ہوا۔ 1821ء میں فلوریڈا کا گورنر بنا۔ 1823ء میں ایک بار پھر سینٹ کا کارکن منتخب ہوا۔ 1824ء کے صدارتی انتخابات میں ڈیموکریٹک پارٹی کے نمائندے کی حیثیت سے حصہ لیا لیکن ناکام رہا۔ 1828ء کے انتخابات میں کامیاب ہوا۔ اور 1832ء میں دوبارہ صدر منتخب ہوا۔ اس کا انتقال 8 جون 1845ء کو ہوا۔

1854ء امیل وون بیرنگ ایک جرمن فعلیات دان تھے جنھوں نے 1901 میں فعلیات کا نوبل انعام حاصل کیا۔ انھوں نے خناق کی بیماری کے لیے ایک دوا تیار کی۔ ان کا انتقال 31 مارچ 1917ء کو ہوا۔

1878ء شاہ ایران۔ اصل نام رضا خان، سپاہی کے بیٹے تھے۔ معمولی تعلیم حاصل کی۔ نوجوانی میں فوج میں بھرتی ہو گئے اور جلد ہی اعلیٰ عہدے پر فائز ہو گئے۔ 1921ء میں حکومت کا تختہ الٹ دیا اور 1923ء میں وزیر اعظم کا عہدہ خود سنبھال لیا۔ انھوں نے فارس کو ایران کا نام دیا۔ 1925ء میں خاندان قاجار خاندان کے آخری بادشاہ احمد شاہ قاجار کو معزول کرکے خود بادشاہ بن گئے اور رضا شاہ پہلوی کا لقب اختیار کیا۔ انھوں نے فوج اور ملکی نظم و نسق میں اصلاحات کیں، بیرونی ممالک کی مراعات منسوخ کر دیں اور ایران کو خارجی اثر و رسوخ سے پاک کر دیا۔ ان کے عہد میں ٹرانس ایرانین ریلوے کا اجرا ہوا اور تہران یونیورسٹی قائم ہوئی۔ دوسری عالمی جنگ میں ایران نے جرمنی کے ساتھ دوستانہ تعلقات قائم رکھے۔ اس پر برطانوی اور روسی افواج ایران میں داخل ہو گئیں۔ انگریزوں نے رضا شاہ کو تخت چھوڑنے اور اپنے بیٹے محمد رضا شاہ پہلوی کو حکومت سونپنے پر مجبور کیا۔ 1941ء میں رضا شاہ جنوبی افریقہ چلے گئے اور26 جولائی 1944 کو وہیں وفات پائی۔

1878ء خان بہادر سر شیخ عبد القادر، پاکستان سے تعلق رکھنے والے ممتاز قانون دان، انجمن حمایت اسلام کے قائد، سابق جج لاہور ہائی کورٹ، ادبی رسالہ مخزن کے مدیر تھے۔ انہوں نے مخزن میں علامہ محمد اقبال کا ابتدائی اردو کلام شائع کیا۔ ان کا انتقال 9 فروری 1950ء کو ہوا۔

1920ء ای ڈونالڈ تھامسایک امریکی جینیٹکس ہیں جنھوں نے 1990ء کا نوبل انعام حاصل کیا تھا۔ ان کا انتقال 20 اکتوبر 2012ء کو ہوا۔

1930ء زورس ایونوچ الفرو طبیعیات میں نوبل انعام حاصل کرنے والے روس کے ایک طبیعیات دان تھء جنھوں نے 2000ء میں جرمنی کے سائنس دان کے ہمراہ سیمی کنڈکٹر پر کام کرنے کی وجہ سے جیتا۔ اسی سال یہ انعام ایک امریکی طبیعیات دان جیک سینٹ کلئر کلبی کو بھی ملا۔ ان کا انتقال یکم مارچ 2019 کو ہوا۔

1949ء پروفیسر ڈاکٹر سعادت سعید۔ اردو زبان و ادب سے تعلق رکھنے والے معروف نقاد، شاعر اور محقق ہیں۔ آپ گورنمنٹ کالج یونیورسٹی، لاہور میں پروفیسر اور صدر شعبۂ اردو کی حیثیت سے خدمات انجام دے چکے ہیں اور ان دنوں بطور پروفیسر مذکورہ یونیورسٹی سے وابستہ ہیں۔ علاوہ ازیں، آپ انقرہ یونیورسٹی، ترکی میں اردو و پاکستان اسٹڈیز چیئر سے بھی منسلک رہے

1955ء محسن حسن خان، پاکستان کے معروف سابق کرکٹ کھلاڑی اور کرکٹ تجزیہ کار ہیں۔ وہ اکثر بیٹنگ کا آغاز کرتے تھے۔ انہوں نے کرکٹ سے ریٹائر منٹ کے بعد کچھ ہندوستانی فلموں میں ایکٹنگ بھی کی اور کرکٹ کے دوران ہندوستان کی معروف فلمی ہیروئن رینا رائے کے ساتھ شادی کی جو کامیاب نہ ہو سکی اور چند سالوں کے بعد ان کے درمیان علیحدگی ہو گی۔

1959ء رفیق احمد نقش، پاکستان سے تعلق رکھنے والے اردو کے ممتاز شاعر، ماہر لسانیات، محقق اور ماہر غالبیات تھے۔ انہوں نے اپنی زندگی کا بڑا حصہ درس و تدریس میں گزارا۔ انہوں نے گورنمنٹ سٹی کالج کراچی، کیڈٹ کالج پٹارو، بحریہ کالج کارساز اور محمد علی جناح یونیورسٹی کراچی میں اردو کے استاد کی حیثیت سے خدمات انجام دیں۔ ان کا انتقال 15 مئی، 2013ء کو ہوا۔

1967ء سلیم شیخ ایک پاکستانی فلمی اور ڈراموں کے اداکار ہیں۔ وہ کراچی میں پیدا ہوئے۔ وہ مشہور پاکستانی اداکار فلمساز اور ہدایتکار جاوید شیخ کے بھائی ہیں ۔

وفات

1236ء سُلطان الہند حضرت خواجہ سیّد محمد معین الدین چشتی اجمیری، ہندوستان میں سلسلۂ چشتیہ کے مشہور بزرگ ہیں، آپ قطب الدین بختیار کاکی، بابا فرید الدین گنج شکر جیسے عظیم الشان پیرانِ طریقت کے مرشد ہیں۔ غریبوں کی بندہ پروری کرنے کے عوض عوام نے آپ کو غریب نواز کا لقب دیا جو آج بھی زبان زدِ عام ہے۔ آپ 12 فروری 1142ء کو پیدا ہوئے۔ بعض مورخین نے آپ کی پیدائش کا سال 1141ء بھی درج کیا ہے۔

1536ء پار گلی ابرہیم پاشا، مقبول ابراہیم پاشا جو توپ قاپی محل میں اس کی موت کے بعد مقتول ابراہیم پاشا ہو گیا۔ وہ سلطنت عثمانیہ کا پہلا وزیر اعظم تھا جسے سلیمان اول نے یہ مرتبہ عطا کیا۔
ابراہیم پارگا کا پیدائشی مسیحی تھا جسے بچن میں ہی غلام بنا دیا گیا۔ وہ اور سلیمان اول بچپن سے ہی گہرے دوست بن گئے تھے۔ سلطان سلیمان نے 1523ء وزیر اول پیری محمد پاشا کو جسے اس کے والد سلیم اول نے وزیر اول مقرر کیا تھا، تبدیل کر کے ابراہیم پاشا کو وزیر اعظم مقرر کیا۔ ابراہیم تیرہ سال تک اس عہدے پر فائز رہا۔ لیکن 1536ء میں سلطان نے ابراہیم پاشا کو سزائے موت کا حکم دیا اور اس کی جائداد بحق سرکار ضبط کر لی گئی۔

1962ء آرتھر کومپٹون امریکا کے کے ایک طبیعیات دان تھے جنھیں،کمپٹون ایفکٹ کو دریافت کرنے پر 1927ء کو انھیں نوبل انعام برائے طبیعیات دیا گیا۔ اسی سال یہ انعام چارلس تھومسن ریس ولسن کو بھی دیا گیا۔ وہ 10 ستمبر 1892ء کو پیدا ہوئے۔

2004ء جوہن پوپل ایک انگریز حیاتیاتی کیمیادان تھے جنھوں نے 1998ء کو نوبل انعام برائے کیمیا جیتا تھا۔انھوں نے اشیاء کی برقی خصوصیات کو جاننے میں سائنس کی شعبے کی مدد کی۔ وہ 31 اکتوبر 1925ء کو پیدا ہوئے۔

تعطیلات و تہوار

پولیس کے تشدد کے خلاف بین الاقومی دن۔

1848ء ہنگر ی کا قومی دن ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں