ہم جیت کے لیے نہیں کھیل رہے: شعیب ملک کی حیران کن منطق

Spread the love

ابوظہبی(مانیٹرنگ ڈیسک) ورلڈ چیمپئن آسٹریلیا کے خلاف دو بین الاقوامی ون ڈے مسلسل 8وکٹ سے ہارنے

کے بعد ٹیم پاکستان کے ڈریسنگ روم میں نہ تو کوئی تنا ئوہے، نہ ہی شکست کے بعد گرین شرٹس کے

کھلاڑی کسی قسم کے دبا ئوکا شکار ہیں اور تو اور ماضی میں گرائونڈ کے اندر اترتی چڑھتی صورتحال پر

چہرے پر عجیب و غریب تاثرات سجانے والے کوچ مکی آرتھر کا چہرہ بھی قدرے سپاٹ ہی نظر آیا۔شارجہ

کے دوسرے ون ڈے کے بعد کپتان شعیب ملک کا یہ بیان کہ ‘آئندہ مقابلوں میں جیت سے زیادہ باہر بیٹھے

کھلاڑیوں کو موقع دینا اولین ترجیح ہوگی’، انتہائی حیران کن نوعیت کا نظر آتا ہے۔سب سے اہم سوال یہ ہے کہ

بنا جیت کی سوچ کے نئے کھلاڑیوں کو بین الاقوامی سطح پر موقع فراہم کر کے کیا ان کے جذبات کو اپنی

مرضی کے مطابق ڈھالنے کی کوشش کی جارہی ہے؟ کیونکہ کھیل میں ہار جیت ہی دو بنیادی عنصر ہوا کرتے

ہیں، اگر پہلے ہی یہ کہہ دیا جائے جیسا شعیب ملک نے کہاکہ ہم سیریز جیتنے کے لئے نہیں کھیل رہے، تو یہ

کہاں کی منطق ہے۔ایسا سب کچھ اس وقت کیا جارہا ہے، جب ورلڈ کپ 2019 کی شروعات میں دو ماہ باقی

ہیں اور ٹیم کو ایک یونٹ بنانے کے بجائے تجربات کی نظر کیا جارہا ہے۔حیران کن طور پر آسڑیلیا کے خلاف

ون ڈے سیریز میں کھلائے جانے والے ٹیسٹ ٹیم کے اراکین محمد عباس، یاسر شاہ، شان مسعود اور حارث

سہیل ایک دن کی کرکٹ میں قدرے متاثر کن پرفارمنس نہیں پیش کر سکے۔کٹھن امتحان میں قومی ٹیم کا

سرخرو ہونا گزرتے وقت کے ساتھ ایک بڑا سوال بنتا جارہا ہے۔

Please follow and like us:

اپنا تبصرہ بھیجیں