نیوزی لینڈ مساجد میں دہشت گردی کا مرکزی ملزم برینٹن 5 اپریل تک ریمانڈ پر پولیس کے حوالے

Spread the love

28 سالہ دہشت گرد کو عدالت میں پیش کر دیا گیا ، حملہ آور پر مزید الزامات مزید تحقیقات کے بعد لگائے جائیں گے


حملہ آور کو 5 اپریل تک ریمانڈ پر دیا گیا جس کے بعد دہشت گرد کو ساؤتھ آئس لینڈ شہر کے ہائی کورٹ میں پیش کیا جائیگا،پولیس


مسلمانوں کے خون سے سے ہاتھ رنگنے والا دہشت گرد عدالت میں پیشی کے وقت بھی بے حسی کا مظاہرہ کرتا رہا


ملزم مسکراتے ہوئے ہاتھ سے سفید فام افراد کی برتری کا نشان بناتا رہا، ضمانت کے لیے بھی کوئی درخواست نہیں کی

کرائسٹ چرچ(صباح نیوز، مانیٹرنگ، انٹرنیشنل ڈیسک)کرائسٹ چرچ حملہ کیس میں گرفتار دہشت گرد کو

عدالت میں پیش کر دیا گیا۔ عدالت نے 5 اپریل تک ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیا۔ کرائسٹ چرچ میں 28

سالہ دہشت گرد کو عدالت میں پیش کر دیا گیا، عدالت نے ملزم کو 5 اپریل تک ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر

دیا۔ دہشت گرد پر قتل کے الزامات عائد کیے گئے ہیں، حملہ آور پر مزید الزامات مزید تحقیقات کے بعد لگائے

جائیں گے۔مسلمانوں کے خون سے سے ہاتھ رنگنے والا دہشت گرد عدالت میں پیشی کے وقت بھی بے حسی کا

مظاہرہ کرتا رہا۔ مسکراتے ہوئے ہاتھ سے سفید فام افراد کی برتری کا نشان بناتا رہا جب کہ اس نے ضمانت

کے لیے بھی کوئی درخواست نہیں کی۔ نیوزی لینڈ میں پولیس کا گشت بڑھا دیا گیا، مساجد کی سکیورٹی بھی

سخت کردی گئی۔پولیس کا کہنا تھا کہ حملہ آور کو 5 اپریل تک ریمانڈ پر دیا گیا ہے جس کے بعد دہشت گرد کو

ساؤتھ آئس لینڈ شہر کے ہائی کورٹ میں پیش کیا جائے گا۔ پولیس کمشنر کے مطابق خاتون سمیت 3 افراد کو

گرفتار کیا گیا جن کے قبضے سے اسلحہ اور دھماکہ خیز مواد ملا ہے۔ پولیس نے ابھی تک جاں بحق افراد کی

شناخت ظاہر نہیں کی۔ بنگلہ دیش، بھارت اور انڈونیشیا کا کہنا ہے کہ ان کے شہری بھی حملے میں ہلاک ہوئے

ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں