لاہوریوں کو بیمار جانوروں کا ناقص اور مضر صحت گوشت کھلانے کی بڑی کوشش ناکام

Spread the love

ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی کی سربراہی میں بکر منڈی کے علاقے میں بڑی کارروائیاں


4300 کلو بیمار جانوروں کا گوشت، 8 ہزار کلو جانوروں کی باقیات برآمد، پیمکو سنٹر میں تلف

بکر منڈی اولڈ سلاٹر ہاوس ایریا میں 3 غیر قانونی مذبح خانے، میٹ چلر اور فیٹ رینڈرنگ یونٹ سیل
بیمار جانوروں کا غیر قانونی مذبح خانے میں گوشت تیار کر کے جعلی مہریں لگائی جاتی تھیں۔
شہریوں تک صحت بخش گوشت کی فراہمی پنجاب فوڈ اتھارٹی کی اولین ترجیح ہے۔کیپٹن (ر) محمد عثمان

لاہور (نامہ نگار)ڈائریکٹر جنرل پنجاب فوڈ اتھارٹی کیپٹن (ر) محمد عثمان کی سر براہی میں ویجیلینس ٹیموں نے بکر منڈی کے علاقے میں کارروائیاں کرتے ہوئے لاہوریوں کوبیمار جانوروں کا ناقص اور مضر صحت گوشت کھلانے کی بڑی کوشش ناکام بنا دی ہے۔میٹ سیفٹی ٹیموں نے 4300 کلو بیمار جانوروں کا گوشت اور8 ہزار کلو جانوروں کی باقیات برآمدکر لیں۔تفصیلات کے مطابق ڈی جی فوڈ اتھارٹی کی سربراہی میں بکر منڈی کے علاقے میں بڑی کارروائیاں کرتے ہوئے لاہوریوں کو بیمار جانوروں کا ناقص اور مضر صحت گوشت کھلانے کی بڑی کوشش ناکام بنا دی گئی ہے۔

بکر منڈی اولڈ سلاٹر ہاوس ایریا میں کارروائیوں کے دوران 3 غیر قانونی مذبح خانے، میٹ چلر اور فیٹ رینڈرنگ یونٹ سیل کر دیے گئے۔بیمار جانوروں کا غیر قانونی مذبح خانے میں گوشت تیار کر کے جعلی مہریں لگائی جاتی تھیں۔سیل کیے گئے سلاٹر ہاوس پنجاب فوڈ اتھارٹی کی جانب سے پہلے بھی سیل کیے گئے تھے مگر صحت دشمن عناصر کی جانب سے غیر قانونی طور پر کھول کر کام کیا جا رہا تھا۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی کی ٹیموں نے چیکنگ کے دوران غیر قانونی مذبح خانوں سے جعلی مہریں بھی برآمد کر لیں مگر ملزمان موقع سے فرار ہو گئے۔

ڈی جی فوڈ اتھارٹی کا کہنا تھا کہ شہریوں تک صحت بخش گوشت کی فراہمی پنجاب فوڈ اتھارٹی کی اولین ترجیح ہے۔ بیمار جانوروں کے ناقص گوشت سے متعدد موذی بیماریاں پھیلتی ہیں۔کارروائی کے دوران برآمد شدہ4300 کلو بیمار جانوروں کا گوشت، 8 ہزار کلو جانوروں کی باقیات پیمکو سنٹر میں تلف کر دی گئی ہیں۔کیپٹن (ر) محمد عثمان نے واضح کیا کہ ویجیلنس ٹیمیں گلی محلوں میں چھپے ذبح خانوں کا بھی سراغ لگا رہی ہیں۔انہوں نے شہریوں سے گزارش کی کہ کہیں بھی مضر صحت گوشت دیکھیں تو بذریعہ ٹیلی فون ہیلپ لائن، موبائل اپلیکیشن یا ویب سائٹ اطلاع دیں۔

Please follow and like us:

اپنا تبصرہ بھیجیں