دو نومسلم بہنوں کے شوہروں کو ملاقات سے روک دیا گیا

Spread the love

شیلٹر انتظامیہ شوہروں کو بیویوں سے ملنے کی اجازت نہیں دے رہی

انتظامیہ کودرخواست دی لیکن وہ کہہ رہے ہیں پیرکودیکھیں گے،وکیل

اسلام آباد (نمائندہ خصوصی) سندھ کے ضلع گھوٹکی کی ہندو مذہب چھوڑنے والی دو نومسلم بہنوں کے

شوہروں کو ملاقات سے روک دیا گیا۔ شوہروں کے وکیل عبدالرحیم نے کہا کہ شیلٹر انتظامیہ شوہروں کو

بیویوں سے ملنے کی اجازت نہیں دے رہی، والدین کی لڑکیوں سے ملاقات کرادی گئی، لیکن شوہروں کو روک

دیا گیا، انتظامیہ کودرخواست دی لیکن وہ کہہ رہے ہیں پیرکودیکھیں گے۔

یہ بھی پڑھیں:

ادھر سینیٹر کرشنا کماری اور والدین

نے لڑکیوں سے شیلٹر ہائوس اسلام آباد میں ملاقات کی۔ والدہ نے الزام لگایا کہ بیٹیوں سے کھل کر بات نہیں

کرنے دی گئی۔ سینیٹر کرشنا کماری نے کہا کہ وہاں موجود عملہ بار بارلڑکیوں کو دیکھ رہا تھا، کمرے میں

سول کپڑوں میں دوخواتین بھی تھیں۔ واضح رہے کہ گھوٹکی سندھ کی دو بہنوں روینا اور رینا نے اسلام قبول

کرکے مسلمان لڑکوں صفدر اور برکت سے شادیاں کیں۔ والدین نے کہا کہ انہیں جبری مسلمان کیا گیا جبکہ

لڑکیوں نے پریس کانفرنس میں کہا کہ انہوں نے پسند کی شادی کی اور مرضی سے اسلام قبول کیا۔ یہ بھی

واضح رہے کہ دونوں لڑکیوں کے شوہر پہلے سے شادی شدہ ہیں ان میں ایک برکت علی لڑکیوں کے گھر

مستریوں کا کام کرتا رہا ہے اور یہیں سے ان کا آنکھ مٹکا شروع ہوا اور بات یہاں تک پہنچی

Please follow and like us:

اپنا تبصرہ بھیجیں