بھارت مسعود اظہرکا معاملہ مذاکرات سے حل کرے، چین

Spread the love

بیجنگ (انٹرنیشنل ڈیسک)چین نے مولانامسعود اظہر کے بارے میں اپنے فیصلے

کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے متعلقہ فریقین اس مسئلے کو پیچیدہ بنا نے کی بجائے

مذاکرات اور مشاورت کے ذریعے حل کریں،مسئلے پر متعلقہ اداروں کو قوانین

اور طریقہ کار کی پیروی کرنا ، ایسا حل تلاش کرنا ہو گا جو فریقین کیلئے قابل

قبول ہو۔تفصیلات کے مطابق چینی وزارت خارجہ کے ترجمان لوکھانگ نے

جمعرات کومعمول کی پریس بریفنگ میں مولانا مسعود اظہر کیخلاف بھارت کے

کہنے پر فرانس، امریکہ، برطانیہ کی قرارداد کو ویٹو کرنے کے سوال پر جواب

دیتے ہوئے کہا قرارداد سلامتی کونسل کی ذیلی 1267پابندی کمیٹی میں جمع

کروائی گئی،جس پر چین نے مجوزہ تکنیکی اعتراض اٹھایا، جس پر قرارداد ختم

ہو گئی ، 1267 کی ذیلی کمیٹی پرچین نے عدم شواہد کی بناء پر اعتراضات

اٹھائے،ذیلی کمیٹی کوئی بھی فیصلہ تمام اراکین کی مشاورت سے کرتی ہے اگر

کوئی بھی مخالفت کرتا ہے تو تجاویز یا قرارمسترد کردی جاتی ہے۔ترجمان نے

کہا چین نے ہر بار سلامتی کونسل میں ہمیشہ ذمہ دارانہ رویے کا مظاہرہ کیا ،

سکیوٹی کونسل میں اپنا فعال کردار ادا کرتے رہیں گے، دیرپا نتائج کیلئے سنجیدہ

مذاکرات کی اشد ضرورت ہے، چین اس مسئلے پر فریقین سے رابطے میں رہے

گا، دہشت گردی پر چین کا موقف اصولی اور واضح ہے، چین نے کمیٹی کے

طریقہ کار اور قواعد و ضوابط پر مکمل عمل کیا ہے ۔ و ا ضح رہے چین اس قبل

بھی 2مرتبہ قراداد کو ویٹو کر چکا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں