بینائی سے محروم نائلہ عندلیب کی کتاب’’شاہ بابا‘‘ شائع ہوگئی، جلد تقریب رونمائی ہو گی۔

Spread the love
اک نئے طرز اور نئے اسلوب کی شاعرہ، نائلہ عندلیب

پیر محل (ادبی رپورٹر، وائس آف ایشیا،)پیر محل کی نوجوان نا بیناشاعرہ نائلہ عندلیب کی شاعری اور افسانہ پر مشتمل کتاب” شاہ بابا” چھپ کر مار کیٹ میں آگئی ہے اور اس طر ح سے وہ پاکستان کی پہلی نابینا صاحب کلام شاعر ہ بن گئی ہیں ۔

نائلہ عندلیب کی5 بر س کی عمر میں اچانک بینائی چلی گئی تھی مگر کچھ کرنے کا عزم ختم نہ ہو سکا۔نائلہ عند لیب مختلف ایف ایم ریڈیو ز پر جانی پہچانی جاتی ہیں، ریڈیو کے بہترین سامعین میں شمار کی جاتی ہیں۔

وہ ہمیشہ بینائی سے محروم افراد کی حوصلہ افزائی اور ان کے حقوق کے لیے آواز اٹھاتی نظر آتی ہیں۔

ہمارے نمائندے سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میں چاہتی ہوں کے بینائی سے محروم افراد کے لیے ایک ایسا ادارہ بناوں جہاں ان کے لیے تمام تر سہولیات دستیاب ہوں

انہوں نے کہا میں ایک ایسا ادارہ بنانا چاہتی ہوں جس کے پلیٹ فارم سے آواز بلند کی جائے اور لوگوں کو اس بات کی ترغیب دلائی جائے کہ وہ مرنے سے پہلے اپنے جسم کے وہ تمام اعضا جو کسی کے کام آ سکتے ہیںان کو عطیہ کرنے کی وصیت کریں تاکہ ان کے مرنے کے بعد بھی ان کی آنکھیں دیکھتی رہیں اور ان کے اعضا کام کرتے رہیں۔

انہوں نے کہا کہ یورپ میں جو لوگ حادثوں کا شکار ہوتے ہیں ان کے اعضا لے کر ضرورت مندوں کی پیوند کاری کی جاتی ہے، انہوں نے کہا کہ ہمارا دین بھی ہمیں یہی سکھاتا ہے کہ ہم دوسروں کے کام آئیں۔

ہر دور کے شعرا میں ان کا کوئی شعر ضرب المثل بنتا رہا ہے آج کے دور میں نا ئلہ کا ایک شعر بھی ضرب المثل بن گیا ہے

کون کہتا ہے کہ میں نا بینا ہو ں

دل کی آنکھ کھلی ہے ،میں بینا ہوں

یہ کتاب صبح نو پبلشرز مسلم سنٹرچٹر جی روڈ سے شائع ہوئی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں