ہماری قوم ٹیکنالوجی کی اہمیت جان چکی ہے اب مناسب ماحول اور معیاری تربیت کی ضرورت ہے : صدر پاکستان

Spread the love
صدر پاکستان عارف علوی جدید مشینی ٹیکنالوجی اور کمپیوٹر کے استعمال کے بارے میں صدارتی پروگرام کے داخلہ ٹیسٹ میں شریک طلبہ سے خطاب کر رہے ہیں

صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ دنیا چوتھے صنعتی انقلاب کے دہانے پر ہے اور اس انقلاب سے مکمل استفادہ کرنے کے لئے نوجوانوں کو جدید ٹیکنالوجی کے مختلف شعبوں میں تربیت دی جا رہی ہے، نوجوان چوتھے صنعتی انقلاب کے لئے خود کو تیار رکھیں، ہر ملک اور قوم کو مصنوعی ذہانت اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کی صورت میں شروع ہونے والے اس گیم کا حصہ بننا پڑے گا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اتوار کو یہاں جدید مشینی ٹیکنالوجی اور کمپیوٹر کے استعمال کے بارے میں صدارتی پروگرام کے داخلہ ٹیسٹ میں شریک طلبہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

صدر مملکت نے کہا کہ ملک کی آبادی کا بڑا حصہ نواجوانوں پر مشتمل ہے، نوجوانوں کو اپنی مہارت میں اضافہ کرنے کے ساتھ اس حوالے سے درپیش چیلنجز سے بھی خود کو باخبر رکھنا ہوگا۔ صدر مملکت نے کہا کہ یہ ٹیکنالوجی ہی ہے جو دنیا میں وسیع تبدیلیاں لاچکی ہے اور کوئی بھی ملک اس سے خود کو الگ رکھنے کا متحمل نہیں ہوسکتا۔

انہوں نے کہا کہ مصنوعی ذہانت اور کمپیوٹرائزنگ ڈیٹا کی صنعت اس وقت چند بلین ڈالر کی ہے لیکن یہ تخمینہ ہے کہ 2022ءسے 2025ءتک یہ 3 ٹریلین ہوجائے گا جبکہ 2030ءسے پہلے یہ 30 سے 40 ٹریلین ڈالرتک پہنچ جائے گا۔ ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ ہماری قوم ٹیکنالوجی کی اہمیت جان چکی ہے لیکن ضرورت اس بات کی ہے کہ اب ان کو مناسب ماحول اور معیاری تربیت فراہم کی جائے۔ صدر مملکت نے داخلہ ٹیسٹ میں بڑی تعداد میں شریک نوجوانوں کے جوش وجذبے کو سراہتے ہوئے کہا کہ ملک کے دیگرصوبوں میں بھی داخلہ ٹیسٹ کو منعقد کیا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں