پرانی پائپ لائن اور کم پریشر کی وجہ سے بھی صارفین کو مشکلات کا سامنا ہے، لائنوں کی تبدیلی کے لیے کام جاری ہے۔ گیس ذرائع

Spread the love

وزیر پیٹرولیم غلام سرور خان نے کہا کہ گیس بحران کی ذمہ دار حکومت یا اوگرا نہیں اس سلسلہ میں تحقیق سے معلوم ہوا کہ سوئی ناردرن اور سوئی سدرن کمپنیاں اس کی ذمہ دار تھیں اور ان کے ایم ڈیز کو ہٹا دیا گیاہے۔
دوسری طرف ملک کے اکثر علاقوں میں گیس دستیاب نہیں ہےچولہے ٹھنڈے پڑے ہوئے مگر اس سلسلہ میں کوئی بات سننے کو تیار نہیں لاہور میں مختلف علاقوں کے صارفین نے بتایا کہ گیس نہ ہونے کی شکایت درج کرانے جائیں تو ایک کمرے سے دوسرے کمرے میں فٹبال بن جاتےہیں۔ گیس ذرائع کے مطابق گھر گھر گیس کمپریسر کی وجہ سے بھی گیس کی فراہمی میں تعطل ہوتا ہے ذرائع کا کہنا ہے کہ کم پریشر کے وقت جب کمپریسر چلتا ہےتو 20 گھروں کی گیس بند ہو جاتی ہےذرائع کے مطابق جن علاقوں کی پائپ لائنیں پرانی ہو چکی ہےان میں زنگ اور کم پریشر کی وجہ سے گیس نہیں پہنچتی جس سے صارفین کو مشکلات کا سامنا ہے، ذرائع کا کہنا ہے کہ جن علاقوں کی پائپ لائنیں 20 برس سے زیادہ پرانی ہو چکی ہیں ان کو تبدیل کیاجا رہا ہے پہلے مرحلے میں پرانے میٹر تبدیل کیے گئے اسی طرح دوسرے مرحلے میںپائپ لائنیں تبدیل کی جائیں گی اس سلسلہ میں کام ہو رہا ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں