وزیر اعلی اور وزیر اعظم اپنی منطق کے مطابق ہی استعفیٰ دیں: شہباز شریف کی اسمبلی میں تقریر

Spread the love

سانحہ ساہیوال پر قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف اور مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے وزیر اعظم عمران خان اور وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے استعفے کا مطالبہ کردیا۔

قومی اسمبلی میں سانحہ ساہیوال پر اظہار خیال کرتے ہوئے شہباز شریف نے کہا کہ ‘واقعے پر کل وفاقی اور پنجاب کے وزرا نے یہ کہا کہ سانحے کی رپورٹ 72 گھنٹے میں سامنے لائے جائے گی جو نہیں لائی گئی، یہ بھی کہا گیا کہ سانحے کے نتیجے میں چند افسران کو عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے اور ایسا پہلی بار ہوا ہے جو کہ غلط بیانی تھی۔’

انہوں نے کہا کہ ‘ہم نے ماڈل ٹاؤن واقعے کی رات کو ہی آر پی او لاہور کو عہدے سے ہٹا دیا گیا تھا، جبکہ ہم نے معاملے کی تحقیقات کے لیے اسی رات جوڈیشل کمیشن تشکیل دیا تھا۔’

ان کا کہنا تھا کہ ‘وزیر اعظم صاحب آج ساڑھے 3 مہینے بعد آئے ہیں، ماڈل ٹاؤن واقعے کے حوالے سے انہوں نے کہا تھا کہ مجھے استعفیٰ دے دینا چاہیے اور رانا ثنا اللہ کو گرفتار کیا جانا چاہیے، پنجاب میں آج جو نظام ہے اور صوبے کے جو وزیر اعلیٰ ہیں وہ وزیر اعظم کی اجازت کے بغیر کوئی کام نہیں کرتے، لہٰذا وزیر اعظم کو اپنی ہی منطق کے مطابق پہلے استعفیٰ دینا چاہیے اور پھر عثمان بزدار کو استعفیٰ دینا چاہیے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں