نندی پور پراجیکٹ کیس میں سابق وزیر قانون بابر اعوان نیب عدالت میں پیش

Spread the love

احتساب عدالت میں سابق وزیر قانون بابراعوان نے موقف اختیار کیا کہ نندی پور پراجیکٹ کی بنیادی منظوری وزارت خزانہ نے دینا تھی۔ وزارت قانون کے پاس صرف قانونی رائے دینے کا اختیار تھا۔ یہ ریفرنس نیب کے ایگزیکٹیو بورڈ کی میٹنگ کے بغیر بنایا گیا۔ جمعرات کو احتساب عدالت اسلام آباد میں سابق وزیر قانون بابر اعوان کیخلاف نندی پور ریفرنس کی سماعت ہوئی۔

احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے نندی پور ریفرنس کی سماعت کی۔ سماعت کے دوران بریت کی درخواست پر دلائل جاری رکھتے ہوئے وکیل بابر اعوان کا کہنا تھا کہ کوئی پراجیکٹ اچھا ہے یا برا، یہ بتانا وزارت قانون کا کام نہیں ہوتا۔ نندی پور کی بنیادی منظوری وزارت خزانہ نے ہی دینا تھی۔ میں نے اللہ کو جان دینی ہے، کسی الزام تراشی میں نہیں پڑوں گا۔ میں نے وزیر بننے سے پہلے وزارت قانون کی سمری منظور کرنے سے انکار کیا تھا۔ تفتیشی افسر صاحبہ نے کہہ دیا ہمارے ہاتھ صاف نہیں تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں