معروف افسانہ نگار خالدہ حسین 80 برس میں انتقال کر گئیں

Spread the love

خالدہ حسین کی نماز جنازہ دوپہر 2 بجے ہ ٹیپو مارکیٹ جی ایٹ اسلام آباد میں ادا کی گئی اور مقامی قبرستان میں دفن کر دیا گیا۔ جنازہ میں زندگی کے مختلف شعبہ ہائے زندگی کے تعلق رکھنے والے افراد سمیت ادیبوں اور دانشوروں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔
خالدہ حسین اردو افسانے کا ایک اہم اور نمایاں نام تھیں۔خالدہ حسین 18 جولائی 1938ء کو لاہور میں پیدا ہوئیں تھیں۔خالدہ حسین نے 1954ء میں لکھنے کا آغاز کیا تھا۔خالدہ حسین کی کتابوں میں کا غذی گھاٹ،جینے کی پابندی،میں یہاں ہوں شامل ہیں۔حکومت پاکستان نے خالدہ حسین کو 14 اگست 2005ء کو صدارتی تمغہ برائے حسن کارگردگی عطا کیا تھا۔ خالدہ حسین کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ خواتین لکھاریوں میں قرۃالعین حیدر کے بعد سب سے زیادہ پسند کی جانے والی مصنفہ تھیں۔
خالدہ حسین کے انتقال پر مخلتف ادبی و سماجی شخصیت سے افسوس کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ ادب کے لیے افسانہ نگار خالدہ حسین کی خدمات ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں