دہشت گردی کی روک تھام کے لیے پاکستان تعاون نہیں کرنا چاہتا۔ کیمرون منٹر

Spread the love

کراچی کے نجی ہوٹل میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیمرون منٹر نے کہا کہ امریکا نے پاکستان میں صحت، تعلیم اور سماجی خدمات کے فروغ کے لیے سرمایہ کاری کی، امریکا نے ہمیشہ پاکستان کے ساتھ تعاون کیا اور چاہتا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان تعلقات مضبوط رہیں۔
کیمرون منٹر نے کہا کہ پاکستان میں تعلیم کے فروغ کے لیے سندھ اور بلوچستان میں کافی پیسہ دیا لیکن سارا پیسہ درست انداز میں استعمال نہیں ہوا۔

انہوں نے کہا کہ امریکا چاہتا ہے پاکستان میں ترقی ہو اس کے لئے سنجیدگی اور اعتماد کی ضرورت ہے، پاکستان کو امریکا سے ملنے والے فنڈز کو شفاف طریقے سے استعمال کرنا چاہیے، اب وقت ہے کہ پاکستان گڈ گورننس پر کام کرے۔

سابق امریکی سفیر نے کہا کہ مشرف دور میں بھی پاکستان کو دہشت گردی کے خاتمے کے لیے پیسے دیےگئے اور امریکا کو لگتا ہے کہ دہشت گردی کی روک تھام کے لیے پاکستان تعاون نہیں کرنا چاہتا۔

کیمرون منٹر نے کہا کہ پاکستان اور امریکا کے تعلقات میں اتار چڑھاؤ آتے رہتے ہیں، پاکستان کی زیادہ توجہ ترقیاتی کاموں کی جانب ہوتی ہے، اب وقت ہے کہ پاکستان گڈ گورننس پر کام کرے، امریکا چاہتا ہے کہ پاکستان کا ہر بچہ پڑھا لکھا ہو۔

کیمرون منٹر نے کہا کہ امریکا نے پاکستان کے ساتھ بہت سے پروگرام شروع کر رکھے ہیں جن کا مقصد لوگوں کو تربیت یافتہ بنانا ہے۔

سابق امریکی سفیر کا کہنا تھا کہ پاکستان دہشت گردی کی زد میں ہے، پاکستان سمیت دیگر ممالک کی افواج بھرپور تربیت یافتہ ہیں، کسی کو اجازت نہیں کہ افواج کے معاملات میں بات کرے۔

کیمرون منٹر نے کہا کہ اسلام آباد اور واشنگٹن کا براہ راست رابطہ اور تعلقات اتنے مضبوط ہوں کہ درمیان میں آنے والی رکاوٹیں بے معنی ہوں، امریکا بھارت ، روس اور چین کے ساتھ بھی رابطوں میں مصروف ہے اور باہمی بات چیت سے معاملات حل کرنے کا خواہش مند ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں