آسٹریلیا میں دو مسلمان عورتیں تعصب کا نشانہ بن گئیں

Spread the love

آسٹریلوی میڈیا کے مطابق سوشل میڈیا پر وائرل ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ میلبرن کی ایک ٹرین میں ایک خاتون نے پہلے دین اسلام کی توہین کی اور پھر ٹرین میں موجود نقاب پہنے ایک خاتون پر حملہ کر دیا۔

ٹرین میں ہی موجود ایک اور مسلمان خاتون نے جب متاثرہ خاتون کی مدد کرنا چاہی تو حملہ آور خاتون نے اس کا نقاب بھی اتار دیا۔

فہیمہ عدن نامی مسلمان خاتون نے بتایا کہ ٹرین میں ایک عورت اسلام کے خلاف باتیں کرتے ہوئے ایک مسلمان خاتون کا اسکارف اتارنے کی کوشش کر رہی ہے۔

فہیمہ عدن نے مزید بتایا کہ جب اس نے دوسری مسلمان خاتون کو بچانے کی کوشش کی تو اسلام مخالف خاتون نے اس پر بھی حملہ کر دیا

فہیمہ عدن نے سوشل میڈیا پر اپنے پیغام میں لکھا کہ ٹرین میں پیش آنے والے حادثے نے میری آنکھیں کھول دی ہیں۔

مسلمان خاتون نے مزید لکھا کہ ٹرین میں موجود کسی بھی شخص نے حملہ کرنے والی عورت کو روکنے کی کوشش نہیں کی اور جب سب نے دیکھا کہ میں اپنا دفاع کر رہی ہوں تو ایک شخص نے اس عورت کو روکا۔

فہیمہ عدن نے کہا کہ مجھے اس واقعے پر بہت دکھ ہوا

متاثرہ مسلمان خاتون نے بتایا کہ وہ تقریباً ڈیڑھ گھنٹے تک پولیس کا انتظار کرتی رہیں لیکن پولیس نہیں آئی۔

بعد ازاں پولیس نے مسلمان خواتین پر حملے کے الزام میں کلیٹون کی ایک 39 سالہ خاتون کو حراست میں لیا جسے بعد ازاں ضمانت پر رہا کر دیا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں