چیف جسٹس کا 32پٹرول پمپوں کے قیام،10پاور کمپنیوں کو اضافی ادائیگی کا نوٹس

Spread the love

چیف جسٹس پاکستان نے بجلی پیدا کرنے والی 10کمپنیوں (آئی پی پیز )کو اضافی ادائیگیوں پر ازخود نوٹس لیتے ہوئے رپورٹ طلب کرلی،چیف جسٹس نے قراردیا کہ عدالت کے علم میں آیا ہے کہ پچھلے 8ماہ کے دوران 10آئی پی پیز کو ڈیڑھ ارب ڈالرکی اضافی ادائیگیاں کی گئیں،بظاہر یہ سرکلرڈیٹ کاحصہ ہے ،چیف جسٹس اور مسٹر جسٹس اعجازالاحسن پر مشتمل بنچ آج 6جنوری کو لاہور میں اس کیس کی سماعت کرے گا،عدالت نے اٹارنی جنرل اور ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو نوٹس بھی جاری کردیئے ہیں۔سپریم کورٹ نے سرکاری اراضی پر مزید 32پٹرول پمپس کے قبضوں کے معاملے پر ازخود نوٹس لیتے ہوئے قابضین سے جواب طلب کرلیا۔عدالت نے یہ کارروائی عبداللہ ملک کی درخواست پر کی ہے ،درخواست گزار کا کہناہے کہ 28 پٹرول پمپس صوبائی جبکہ 4ضلعی حکومت کی اراضی پر قائم تھے ،15سال قبل ان کی لیز ختم ہوگئی لیکن پٹرول پمپس قائم ہیں حکومت کو 15 برسوں سے ایک روپے بھی نہیں دیا جا رہا،چیف جسٹس نے تمام قابضین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کرلیا۔

Please follow and like us:
کیٹاگری میں : Uncategorised

اپنا تبصرہ بھیجیں